Original Articles

Shia genocide: 5 students killed as bomb hits university bus in Quetta

Quetta: June 18 – State-sponsored Shia genocide entered new phase in Pakistan today when a bus of Shia students was targeted in Quetta. The students were proceeding to attend a holy gathering (Eid-e-Meraj) which is revered by both Sunni and Shia Muslims.

The IED used in today’s attack is a hallmark of the Taliban (and affiliated ASWJ-LeJ militants) trained by Pakistan army to conduct terrorist activities in Afghanistan.

At least 4 Shia students and one Sunni student were killed and another 52 students injured when a roadside planted bomb hit a university school bus in Pakistan’s southwest city of Quetta on Monday morning.

At least 12 students are in critical condition who were shifted to CMH while others are being treated at Civil Hospital and Bolan Medical Complex, Quetta.

CMH Quetta says 70 injured students are brought to CMH where 5 are dead and 12 in serious condition, 22 girls students included. (Update: One female student has died.)

The incident is the latest in the systematic attack on Pakistan’s Shia Muslims by Jihadi-sectarian (mostly Deobandi-Wahhabi) militants affiliated with the Taliban and Al Qaeda who are also known to enjoy the support of Pakistan’s ISI (army intelligence agency).

The blast took place at about 8:20 a.m. local time when a bus carrying 52 students from Balochistan IT University was hit by a bomb fixed inside a vehicle parked by the roadside near a Federal Investigation Authority (FIA) building on the Smangli Road of the city.

The blast left a two-foot-deep crater on the ground, said eyewitnesses, adding that a motorbike and rickshaw nearby were also destroyed.

Shia genocide in Pakistan is often ignored by local media or is dishonestly misrepresented as routine sectarian violence between Sunnis and Shias. This is notwithstanding the fact that Jihadi-sectarian militants belonging to Taliban and Lashkar-e-Jhangvi (aka Ahle Sunnat Wal Jamaat) massacre both Shia and Sunni Muslims. Some establishment friendly writers and journalists e.g. Hamid Mir, Raza Rumi, Najam Sethi etc, routinely misrepresent Shia genocide as ethnic violence against a specific ethnic group (Hazara) or worse represent it as Sunni-Shia violence.

Pakistani media does not have the guts to say #Shia were targeted and killed in Quetta attack.

9 out of 50 wounded are female students. It couldn’t have got more tragic

Names of today’s University Bus attack’s martyrs: Aqil, Hadi, Sayed hussain, Shahid.

Countrymen, media persons, remember: Your silence on #ShiaGenocide is criminal.This silence is complicity. It’s shame. Silence is tragedy. And unforgivable.

Police in Quetta too is under attack by ASWJ-Taliban terrorists who are supported by Pakistan army (Frontier Constabulary, ISI).

The same people (army, ISI) who are killing Balochs and Shias in Quetta are also attacking police officers and men who want to stop terrorists from attacking innocent civilians.

اطلاعات کے مطابق کوئٹہ کے علاقے سمنگلی روڈ پر ایف آئی اے کے دفتر کے قریب یونیورسٹی کی بس کے قریب دھماکا ہوا ہے جس کے نتیجے میں کم از کم 4طلباء شہید، جبکہ 30 سے زائد زخمی ہے۔

مزید تفصیلات کے مطابق کالعدم لشکر جھنگوی (نیا نام اہل سنت والجماعت ) کے دہشگردوں نے آج آئی ٹی یونیورسٹی کی ایک بس کو دھماکہ خیز مواد سے نشانہ بنایا، بس میں 70 افراد سور تھے، جس میں اکثریت شیعہ طالب علموں کی تھی، دہشتگردوں نے سمنگلی روڈ پر ایف آئی اے کے دفتر کے قریب بس کو نشانہ بنایا، جس کے نتیجے میں 4 شیعہ طالب علم شہید ہوگئے، شہید والوں میں رشید ، عقیل ، معصومہ, ہادی شامل ہے۔

دھماکے سے بس کو ذبردست نقصان پہنچا جبکہ قریب سے گذرنے والے رکشہ اور موٹر سائیکل سوار بھی متاثر ہو ئے۔ دھماکے سے جائے وقوع پر تین فٹ گہرا گڑھا پڑ گیا جبکہ یونیورسٹی کے طلباء سمیت 30 سے زائد افراد زخمی ہو گئے جنہیں سی ایم ایچ اسپتال منتقل کر دیا گیا ہے جہاں اسپتال انتظامیہ نے 4 طلباء کے شہید ہونے کی تصدیق کر دی۔ زخمیوں میں بعض کی حالت نازک بتائی جارہی ہے

سی سی پی او کوئٹہ میر زبیر نے میڈیا کے نمائندوں کو بتایا کہ لگتا ہے کہ دھماکہ ریمورٹ کنٹرول تھا جسے ایک گاڑی میں نصب کیاگیا تھا، بم ڈسپوذل اسکواڈ کے مطابق دھماکہ میں 40 سے 50 کلوگرام دھماکا خیز مواد استعمال کیا گیا،

ملک کے دوسرے حصوں کی طرح کوئٹہ میں بھی شیعہ نسل کشی کا سلسلہ جاری ہے جس کو پاکستان کی فوج خاص طور پر آئ ایس آئ کی سرپرستی حاصل ہے – پاکستان کے اردو اور انگریزی میڈیا میں شیعہ نسل کشی کو غلط طور پر سنی شیعہ فرقہ واریت کے روپ میں پیش کیا جاتا ہے – حامد میر جیسے دائیں بازو کے صحافی سے لے کر نجم سیٹھی جیسے بائیں بازو کے صحافی تک سب لوگ شیعہ نسل کشی کو چھپانے یا غلط طور پر بیان کرنے میں مصروف ہیں – جماعت اسلامی کے روزنامہ امت سے لے کر رضا رومی کے دی فرائیڈے ٹائمز اور جناح انسٹیٹیوٹ تک سب شیعہ نسل کشی کی راہ ہموار کر رہے ہیں اور کویٹہ میں آئ ایس آئ کے حمایت یافتہ افراد کی حمایت کر رہے ہیں –

پاکستان کا شمار اُن ممالک میں کیا جاتا ہے جہاں شیعہ مسلمانوں کے حقوق کو سرے عام غصب کیا جاتا ہے۔ البتہ دیگر ممالک کی حکومت اور خود ریاستی ادارہ شیعہ دشمنی میں مصروف ہے جبکہ پاکستان میں حکومت اور ریاست کے دیگر ادارہ بشمول عسکری ادارے شیعہ دشمن دہشتگردوں کو لگام دینے میں ناکام رہے ہے۔ ریاست کی اہم شخصیات خاص طور پر آرمی چیف اور چیف جسٹس خود دہشتگردوں کی سرپرستی کررہے ہیں ۔

Source: Adapted from Shia Killing

Videos:

Geo Headlines:

http://youtu.be/RQOhqmNLoGU

In Picture: One Shia student (Aqeel Raza) killed in the bus attack:

About the author

SK

6 Comments

Click here to post a comment
  • Syed Haider Karrar ‏@HaiderKarrar
    People are dying and our #CJ is busy saving the so called ISI backed azad aadlia #ShiaGenocide #Quetta #Pakistan

    Anwar Changezi ‏@AnwarChangezi
    @ImranKhanPTI When will you lead a march against Lashkar-e-Jhangvi and Sipah-e-Sahaba, groups which pre-date drones? #ShiaGenocide

    Laibaah ‏@Laibaah1
    Dear “Forum for Secular Pakistan” and its liberal promoters: Do you know anything about #ShiaGenocide at the hands of ISI?

    Laibaah ‏@Laibaah1
    By misrepresenting it as ethnic or sectarian violence these people enable #ShiaGenocide: Hamid Mir, Raza Rumi, Orya Maqbool Jan, Najam Sethi

    Laibaah ‏@Laibaah1
    Abdul Khaliq Hazara and the ethnic cleansing narrative – by Marya Mushtaq http://wp.me/p1joLZ-a0l #ShiaGenocide

    Syeda Afrin Abbas ‏@Afrin_Abbas
    Hamari har eid ko banaya gaya roz-e-gham, Kis ke daman se talab insaf karen, Kiske hathon talash karen apna lahu! #QuettaBlast #ShiaGenocide

    Mubarizaمبارزه ‏@Pashtunkhwa
    CMHquetta says 70 injured students are brought to CMH where 5 are dead and 12 in serious condition,22 girls students included.

    Laibaah ‏@Laibaah1
    Marvi Sirmed speaks to 4/5 activists of ISI-backed HDP in Islamabad protesting against “Hazara genocide” http://worldshiaforum.wordpress.com/2012/04/13/is-it-hazara-genocide-or-shia-genocide-by-musa-changezi/ #ShiaGenocide

    Syed Haider Karrar ‏@HaiderKarrar
    Where are the organizations who claim themselves as the thekaydar of human rights? #HR

    Syed Haider Karrar ‏@HaiderKarrar
    Now where is that one eyed man who calls himself as the chief justice? #ShiaGenocide #Quetta #Pakistan

    Anwar Changezi ‏@AnwarChangezi
    @Darveshh Those who were not equal in life, will not be equal in death either. Even more unfortunate than Islamic University students. #Shia

    Mandeep Singh Bajwa ‏@MandeepBajwa
    No longer sectarian violence but slaughter.] : Bus carrying #Shia students targeted with bomb in Quetta, 4 killed, 50+ injured.”

    Anwar Changezi ‏@AnwarChangezi
    @Laibaah1 In today’s blast 2 Sunnis also lost lives. 10+ injured, 3 critical. Majority & the target were Shias though. #Quetta #ShiaGenocide

    Laibaah ‏@Laibaah1
    @AnwarChangezi Those who are killing Shias are also killing Sunnis. Still, Raza Rumi & other compromised liberals call it sectarian violence

    Darvesh ‏@Darveshh
    I ll keep sharing this picture.We Shias ve lost too many of such handsome & talented youngsters. #ShiaGenocide #Hazara http://t.co/rSIly7az

  • Not once in this article, BBC Urdu has used the word Shia or Shia genocide (Shia Nasal Kushi) nor has identified the ISI-sponsored Jihadi-sectarian militants (ASWJ-LeJ-Taliban etc).

    کوئٹہ: یونیورسٹی بس پر بم حملہ، چار ہلاک
    آخری وقت اشاعت: پير 18 جون 2012 ,‭ 07:54 GMT 12:54 PST
    Facebook
    Twitter
    دوست کو بھیجیں
    پرنٹ کریں

    پولیس کے مطابق بم دھماکے میں چالیس کلوگرام سے زائد دھماکہ خیز مواد استعمال کیا گیا
    پاکستان کے صوبہ بلوچستان کے دارالحکومت کوئٹہ میں آئی ٹی یونیورسٹی کی بس پر ریموٹ کنٹرول کار بم حملے کے نتیجے میں چار طلبہ ہلاک اور طالب علموں، پولیس اہلکاروں سمیت پینسٹھ افراد زخمی ہوگئے۔
    حکام کے مطابق زخمیوں میں سے بیس کے قریب کی حالت تشویشناک ہے۔
    اسی بارے میں
    کوئٹہ: مدرسے کے باہر دھماکہ، پندرہ ہلاک
    کوئٹہ میں فائرنگ، پولیس اہلکار ہلاک
    کوئٹہ میں بم دھماکہ، چار ہلاک
    متعلقہ عنوانات
    پاکستان, کوئٹہ, بلوچستان
    سول ہسپتال کے ایم ایس کے مطابق زخمیوں کی تعداد پینسٹھ ہے۔
    پولیس نے بتایا کہ آئی ٹی یونیورسٹی کی بس میں ہزارہ قبیلے سے تعلق رکھنے والے طلباء و طالبات سوار تھے اور بس کو پولیس موبائل کی نگرانی میں یونیورسٹی پہنچایا جا رہا تھا۔
    کوئٹہ سے بی بی سی کےنامہ نگار ایوب ترین کے مطابق پیر کو سمنگلی روڈ پر ایف آئی اے دفتر کے قریب نامعلوم افراد نے آلٹو کار میں نصب ریموٹ کنٹرول بم کے ذریعے بس کو نشانہ بنایا۔
    دھماکے کے نتیجے میں چار افراد ہلاک اور نو طالبات، پانچ بچوں اور پانچ پولیس اہلکاروں سمیت چالیس افراد زخمی ہو گئے۔
    زخمیوں کو فوری طور پر سول ہسپتال کوئٹہ منتقل کر دیا گیا ہے جہاں پانچ طالبات سمیت بیس کی حالت نازک ہونے پر انہیں فوجی ہسپتال سی ایچ ایم منتقل کر دیا ہے۔
    دھماکے کے نتیجے میں ایک موٹر سائیکل، ایک رکشہ، پولیس موبائل اور قریبی عمارتوں کو نقصان پہنچا ہے ۔
    پولیس کے مطابق بم دھماکے میں چالیس کلوگرام سے زائد دھماکہ خیز مواد استعمال کیا گیا ہے۔

    بس میں ہزارہ برادری سے تعلق رکھنے والے طالب علم سوار تھے
    دھماکے کے بعد علاقے میں خوف و ہراس پھیل گیا اور والدین کی ایک بڑی تعداد سول ہسپتال پہنچ گئی۔
    واقعہ کے بعد پولیس اور فرنٹیئر کور کی بھاری نفری نے موقع پر پہنچ کر پورے علاقے کو گھیرے میں لے لیا۔
    کیپٹل سٹی پولیس آفیسر میرزبیر محمود نے بتایا ہے کہ سمنگلی روڈ پر نامعلوم دہشت گردوں نے آلٹو کار میں نصب ریموٹ کنٹرول بم کے ذریعے آئی ٹی یونیورسٹی کی بس کو نشانہ بنایا جو پولیس سکواڈ کی نگرانی میں جا رہی تھی۔
    انہوں نے کہا کہ گزشتہ پچیس روز کے دوران پولیس فورس کے نو اہلکار ہلاک ہو چکے ہیں۔

    http://www.bbc.co.uk/urdu/pakistan/2012/06/120618_quetta_blast_zz.shtml

  • How is attack on bus Shia specific? I am not clear. Is it because that area is Shia majority and attack on bus would mean most casualties would be Shia?

  • @Malik

    The attack was Shia specific – leme clarify for you.
    BUITEMS has almost 9-10 buses that carries students from different parts of the city to the university. Out of these buses , one of the bus comes towards Alamdar Road where Shia Hazaras resides. Almost 70+ students from the area goes via bus. Specifically , this bus was targeted which was all so planned. A Police mobile along the bus goes by which was held for security. Since the bus carries almost 97% Shias that’s why it was targeted.