Original Articles

Stand Up for the Prime Minister – by Amna Piracha

PM waves as he arrive at the Supreme Court in Islamabad on Feb 13, 2012. PHOTO: AFP

Contempt of Parliamentary Democracy

Caught in their petty zeal for authority and their messiah complex, the custodians of law and justice have chosen to humiliate a duly elected Prime Minister. “Great Day for Pakistan” claim the pseudo intellectuals of this country and the haranguing anchors and the orchestra gets louder. The scum Sheikh Rashid (a failed politician to boot) has been resurrected and is preaching an ‘arab spring’ in every town and village. Might not be a bad idea for his minders to first see what the ‘arab spring’ has left in its wake before propagating this ‘Plan B’. Might one assume that they are re-thinking Plan A-that is if one can credit them with ‘thinking at all.’ Let us not for a moment have any illusion. Whether it is the ‘arab spring’ or the ‘tsunami’, nothing but destruction will follow in its wake.

In every democratic society, respect is given to the office-the incumbent does not count. It is the sanctity of office that must be guarded. The concept of contempt of court is rooted in the same principle. Democratic societies prescribe clear cut and unambiguous remedies for removing an incumbent. All other routes run contrary to the spirit of democracy and cannot and should not be tolerated.

When Musharraf tried to oust Chaudhry Mohammad Iftikhar, a photo on the front page of the “News” showing the CJ sitting flanked by people in uniform was enough to prompt us to flock spontaneously to the Constitution Avenue in support of this principle. The only question in my mind was “What right do the generals have to summarily dismiss a CJ? What right do they have to humiliate the CJ?” I did not know Chaudhry Mohammad Iftikhar and I did not want to know him or of him. My choice was made. I remember a retired air commodore with some links to Quetta (who is now incidentally applauding Chaudhry Mohammad Iftikhar and his ‘honourable’ brothers in arms with gusto for humiliating the Prime Minister because “he is a chor” while Musharraf was honest”) telling me “what a ghattiya person” Chaudhry Muhammad Iftikhar was and I remember my own spontaneous response “I don’t care- He is the Chief Justice of Pakistan”.

The same principle applies today and with greater force. Syed Yousaf Raza Gillani is the elected Prime Minister of Pakistan. His office is sacred. What right do the judges of the Supreme Court have to insult or humiliate him. In doing so they are violating the sanctity of the office of the Prime Minister. What right do they have to tell him to enter the Supreme Court on foot? In telling him this they are condemning us all to remain on foot forever and lest they forget they are establishing a tradition where nothing will be sacrosanct including their lordships.

It is time to stand up for the Prime Minister.

About the author

Abdul Nishapuri

9 Comments

Click here to post a comment
  • Dajjaal-e-Azam vs Wazir-e-Azam (now in cinemas)

    Dear liberal elites: Your heroes Iftikhar Chaudhry and Imran Khan are badly exposed today. So are you! #Pakistan #CJP #PTI

    Dajjaal-e-Azam has been tasked by ImranKhanPasha to lure PPP workers to storm the SCP building. Patience + Wisdom will do the needful.

    Dajjaal-e-Azam is a Mohsin-Kush. Akbar Bugti, who made him a judge in 1990, was killed in 2006 while he was CJP. Took no action!

    Compared to the Dajjaal in the SCP, Babar Awan looks like an angel.

    The judiciary was always rogue. It’s only that some people didn’t want to recognize the Teen Jeem phenomenon.

    Fore sure these #fakeliberals will revert to bitching about PPP very soon. They are in the PTI-DPC trauma temporarily.

    adnanrasool Adnan Rasool
    Get ready for a suddenly found love for everything PPP by people who have bitched abt PPP for 4 yrs..#pakistan #psuedoliberals #fakepeeplis

    Most of Pakistan’s liberal elites were in full support of CJ Iftikhar Chaudhry and Imran Khan. Do you really deny that?

    Darveshh Darvesh
    Although my friends here may dislike it, or take exception to it, but I must say: Babar Awan admirably handled this Kana clique.

    Chiltan salma jafar
    PM not allowed to bring in his vehicle in the court premises!!!… just how mean and freakish can this get (?) #PPP

    naeemshamim Naeem Shamim
    Bawla ho gaya hai RT @Laibaah1 Dajjaal-e-Zamaa Chief Justice of Pakistan is really frustrated. Have fun folks, he won’t bite, only barks.

    (via Twitter @Laibaah1)

  • پروردگارِ بحر و بَر

    اے مالکِ جن و بشر

    دیتے ہیں تجھ کو واسطہ

    حیدر کی ذوالفقار کا

    پھر سامنے فرعون ہیں

    خوں رنگ ہے دریائےنیل

    پھر آتشِ نمرود کی

    زید میں ہے اولادِ خلیل

    فتنہ گروں کی چال سے

    واقف ہے تُو ربِ جلیل

    پھر سے اَبا بِیلوں کو بھیج

    پھر آگ کو گُلزار کر

    پَروردگارِ بَحر و بَر

    ہم وزیرِ اعظم پاکستان سید یوسف رضا گیلانی کی سرفرازی اور فتنہ گروں کی ناکامی کے لیے دُعا گو ہیں اور عوامِ پاکستان جمہوریت دشمنوں کے عزائم خاک میں ملائے گی۔

  • Well done, Firdaud Ashiq Awan. Pakistan’s fake liberals (flatterers of Sherry Rehman, Tammy Haq and Shehrbano Taseer etc) were making fun of her. An elected politician always stands tall than urban elites (the sell outs):

    شہیدوں کی قبروں کا ٹرائل ہماری پالیسی نہیں‘
    ذوالفقار علی
    بی بی سی اردو ڈاٹ کام، اسلام آباد
    آخری وقت اشاعت: پير 13 فروری 2012 ,‭ 08:12 GMT 13:12 PST
    Facebook
    Twitter
    دوست کو بھیجیں
    پرنٹ کریں

    پاکستان میں وزیر برائے اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے واضح کیا ہے کہ جب تک صدر کو استثنیٰ حاصل ہے اس وقت تک سوئس حکام کو خط نہیں لکھا جائے گا۔
    فردوس عاشق اعوان نے کہا ’آئین کے تحت صدر کو استثنیٰ حاصل ہے۔ جب تک صدر کو استثنیٰ حاصل ہے خط نہیں لکھا جاسکے گا۔ شہیدوں کی قبروں کا ٹرائل ہماری پالیسی میں نہیں ہے۔ محترمہ بے نظیر بھٹو شہید کی قبر کا ٹرائل ہم نہیں کرنے دیں گے اور نہ ہی کریں گے۔‘
    اسی بارے میں
    توہینِ عدالت کیس: وزیراعظم پر فرد جرم عائد
    ایسا نہیں لگتا کہ عدالت سزا دے گی:گیلانی
    انٹرا کورٹ اپیل مسترد، فردِ جرم پیر کو عائد ہوگی‘
    متعلقہ عنوانات
    پاکستان, سیاست
    وزیر اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے ان خیالات کا اظہار سپریم کورٹ کی طرف سے وزیر اعظم سید یوسف رضا گیلانی پر فرد جرم عائد کیے جانے کے بعد عدالت کے باہر صحافیوں سے بات کرتے ہوئے کیا۔
    ایک صحافی کے اس سوال پر کہ اس کا مطلب یہ ہوا کہ آپ کبھی بھی عدالتی حکم نہیں مانیں گے تو وزیر اطلاعات نے کہا ’یہ آپ کی ذاتی رائے ہوگی میں اس سے اتفاق نہیں کرتی۔ یہ عدالت کا احترام ہے اور ان کے حکم کو مانتے ہوئے ہم یہاں آئے ہیں، آپ کی خواہشات پر فیصلے نہیں ہوتے۔‘
    “وزیر اعظم نے عدالت کے حکم کے سامنے سر تسلیم خم کیا۔ عدالت نے انہیں اپنے رُوبرو پیش ہونے کے لیے کہا اور وہ حاضر ہوئے۔ وہ عدالت اور عدالتی فیصلوں کا احترام کرتے رہیں گے۔”
    وزیرِ اطلاعات، فردوس عاشق اعوان
    وزیر اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے یہ بھی کہا کہ وزیر اعظم گیلانی نے فرد جرم سے انکار کیا اور یہ ان کا حق بھی تھا۔
    وزیر اطلاعات نے کہا کہ یوسف رضا گیلانی پاکستان کے پہلے منتخب جمہوری وزیر اعظم ہیں جو دوسری مرتبہ عدالت میں حاضر ہوئے۔
    ’انہوں ( وزیر اعظم ) نے عدالت کے حکم کے سامنے سر تسلیم خم کیا۔ عدالت نے انہیں اپنے رُوبرو پیش ہونے کے لیے کہا اور وہ حاضر ہوئے۔ وہ عدالت اور عدالتی فیصلوں کا احترام کرتے رہیں گے۔ یہ پیپلز پارٹی کی سیاست ہے کیوں کہ پاکستان کی پیپلز پارٹی نے عدلیہ کی بحالی اور ان اداروں کی مضبوطی کے لیے بہت قربانیاں دی ہیں اور ہم جانتے ہیں کہ اس ملک میں جمہوریت اور جمہوری اقدار کے فروغ کے لیے آزاد عدلیہ کی کتنی اہمیت ہے۔‘
    جمعے کو عرب ٹیلی ویژن الجزیرہ سے نشر ہونے والے انٹرویو میں سید یوسف رضا گیلانی نے کہا تھا کہ صدر زرداری کے خلاف سیاسی بنیادوں پر مقدمات بنائے گیے تھے اور انہوں نے یہ مقدمات عدالت میں لڑے اور بری بھی ہوئے۔
    ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ ’صدر زرداری کو نہ صرف پاکستان میں بلکہ پوری دنیا میں استثنیٰ حاصل ہے۔‘
    سابق وزیر اعظم مقتول بے نظیر بھٹو اور صدر پاکستان آصف علی زرداری کے خلاف مقدمات کو دوبارہ کھلوانے کے لیے سوئس حکام کو خط نہ لکھنے پر وزیر اعظم یوسف رضا گیلانی کو توہین عدالت کا سامنا ہے۔
    یہ مقدمات نوے کی دہائی میں میاں نواز شریف کے دور حکومت میں درج کرائے گئے تھے۔

    http://www.bbc.co.uk/urdu/pakistan/2012/02/120213_reaction_pm_case_tk.shtml

  • Marg Bar Teen Jeem

    A two-page charge sheet was read out by Justice Nasirul Mulk, who headed the seven-member bench hearing the case.
    The charge sheet said that the prime minister had violated Article 204 of the Constitution by not writing a letter to the Swiss authorities as ordered by the court. It added that the prime minister also violated paragraph 178 of the court’s verdict in the NRO implementation case.
    Gilani pleaded not guilty and sought more time in the case. But, the court ordered Attorney General Maulvi Anwarul Haq to prosecute the prime minister and present more documents and proof to the court.
    Gilani’s lawyer Aitzaz Ahsan told the court that he will present his arguments on February 22, while Gilani was ordered to bring sufficient evidence by February 27.
    The prime minister was exempted from further hearings while the hearing was adjourned till February 22.
    Prime Minister Gilani was served a contempt notice in the NRO implementation case when the government did not follow the court’s orders of writing a letter to the Swiss authority to reopen graft cases against President Asif Ali Zardari.
    Pakistan Peoples Party (PPP) stalwart Barrister Aitzaz Ahsan is serving as Gilani’s lawyer in the case.
    The Supreme Court has said it will only drop the summons if Gilani obeys its order to write to the Swiss authorities, asking them to re-open the cases.
    If convicted, Gilani faces six months in jail and disqualification from office in a case that has fanned political instability and may force elections within months.

    http://tribune.com.pk/story/335714/contempt-case-gilani-arrives-at-supreme-court/

  • Mirza
    The PCO SC judges have never tried any general including Mush who has thrown them with their families in detention. They have always endorsed military takeover and their acts of high treason. Contempt of court is a small crime compared to high treason and these judges have aided and abetted every dictator. Who is going to try these people for treason? The history of Pakistani SC does not pass smell test.

    Umar Hashmi
    How would SC ensure that the letter is written to the Swiss courts? Even if the PM is charged, found guilty and punished, it does not meet the court’s objective. What will happen then? Who would be required to write and send the letter after the PM, remains to be the basic question?

    Beatle
    Supreme Court pre-determined decision is written on the wall. But by the time judicial process completes, including Intra-Court appeal, the case in Swiss court would die by default on 13th March. However, if they dis-qualify Gilani, another PM from PPP will be there to defy the order. The question is that would they carry-on till dis-qualifying all MNAs belonging to PPP?

    Abbas jaffery
    After a historic verdict..the supreme will soon start contempt proceeding against the head of MI and ISI in the missing persons as they had violated the court order to produce missing person instead they send dead bodies to the families, this may also be murder charges. The court will also take up rights abuses in balochistan, and also take up the issue of sectarian killing oh yes it will also take up the issue of banned outfits holding rallies and distributing hate literature…. Rule of law is for common citizen, when will the common person of this country of pure get some relief….

    http://tribune.com.pk/story/335714/contempt-case-gilani-arrives-at-supreme-court/

  • For the most ill-informed, biased analysis of current political situation in Pakistan, read: http://www.bbc.co.uk/urdu/pakistan/2012/02/120213_pak_poitics_crisis_keplayers_sz.shtml

    Did M. Hanif write this?

    (via Twitter @Laibaah1)

    پاکستان، سیاسی بحران کے کلیدی کردار
    آخری وقت اشاعت: پير 13 فروری 2012

    پاکستان میں سیاسی قیادت، فوج اور عدلیہ کے درمیان ٹکراؤ کے سبب ملک سیاسی بحران سےگزر رہا ہے اور اس میں میموگیٹ اور سیاسی رہنماؤں پر بدعنوانی کے مقدمات جیسے اہم واقعات شامل ہیں۔
    موجودہ تناز‏عہ سے متعلق اہم کرداروں کا خاکہ بی بی سی نے آپ کے لیے تیار کیا ہے۔
    صدر آصف علی زردآری

    زرداری صدر تو ہیں لیکن عوام میں مقبول نہیں ہیں
    اسی بارے میں
    ایسا نہیں لگتا کہ عدالت سزا دے گی:گیلانی
    نہ جھکے ہیں، نہ بِکے ہیں: وزیرِاعظم گیلانی
    انٹرا کورٹ اپیل مسترد، فردِ جرم پیر کو عائد ہوگی‘
    پاکستان کی سب سے متنازعہ سیاسی شخصیت صدر آصف علی زرداری کی ہے جن کے متعلق اکثر یہ کہا جاتا ہے کہ وہ محض اتفاق سے ملک کے صدر کے عہدے پر فائز ہوگئے۔ وہ اپنی اہلیہ اور ملک کی سابق وزیر اعظم بینظیر بھٹو کے قتل کے بعد ہمدردری کی لہر کی وجہ سے ستمبر دو ہزار آٹھ میں اقتدار میں آئے تھے لیکن جب سے وہ صدر کی کرسی پر براجمان ہوئے اس وقت سے سیاسی بحران جاری ہے اور وقت کے ساتھ ساتھ صورت حال مزید غیر مستحکم ہوتی گئي۔
    ان کی قیادت میں امریکہ کے ساتھ پاکستان کے رشتے مزید خراب ہوتے گئے کیونکہ امریکہ مستقل یہ سوال اٹھاتا رہا ہے کہ شدت پسندی کے خلاف اسلام آباد مناسب کارروائی کر رہا ہے یا نہیں۔
    آصف علی زرداری کا کریئر بدعنوانی کے الزامات سے بھی داغدار ہوتا رہا ہے اور اس سلسلے میں سپریم کورٹ ان کے خلاف ایک مقدمہ دوبارہ شروع کرنے کی کارروائي میں ہے جس میں وہ پہلے ہی آٹھ برس جیل میں رہ چکے ہیں۔ اسی کیس کی مناسبت سے وزیراعظم یوسف رضا گیلانی دو بار عدالت میں طلب کیے جا چکے ہیں اور اب انہیں خود توہین عدالت کے مقدمہ کا سامنا ہے۔
    اہم بات یہ ہے کہ صدر زرداری پاکستانی عوام میں بہت کم مقبول ہیں اور صحت کی خرابی کے سبب جب ملک کو اہم مسائل کا سامنا رہا ہے تب وہ چیک اپ کے لیے باہر جاتے رہے ہیں۔
    حال ہی میں ان سے منسوب ایک اور معاملہ ’میمو‘ کا سامنے آیا جب اسامہ بن لادن کی ہلاکت کے بعد انہوں نے مبینہ طور پر فوجی بغاوت کو روکنے کے لیے امریکہ سے مدد کی درخواست کی تھی۔ مسٹر زرداری اس الزام کو مسترد کر چکے ہیں لیکن اس کی تفتیش سپریم کورٹ کی نگرانی میں چل رہی ہے اور اگر وہ قصوروار پائے گئے تو ان کا مواخذہ بھی ہوسکتا ہے۔
    وزیراعظم یوسف رضا گیلانی

    وزیراعظم گیلانی فوج پر نکتہ چینی کرتے رہے ہیں
    وزیراعظم یوسف رضا گیلانی کو پاکستان کی سیاست میں خاموش مزاج رہنما خیال کیا جاتا ہے لیکن حالیہ دنوں میں وہ فوج پر کھلے عام نکتہ چینی کرتے رہے ہیں۔ دسمبر کے اواخر میں انہوں نے حکومت گرانے کی سازش کے متعلق یہ کہتے ہوئے خبر دار کیا تھا کہ ’ریاست میں ہی دوسری ریاست نہیں ہوسکتی اور سبھی پارلیمان کے سامنے جوابدہ ہیں۔‘ اس بیان کا اشارہ فوج کی طرف تھا لیکن فوج نے اس الزام کو فوری طور پر مسترد کر دیا تھا۔
    لیکن اس کے چند روز بعد ہی مسٹر گیلانی نے میمو سے متعلق تفتیش میں حکومت کے خلاف ثبوت فراہم کرنے پر فوج اور آئی ایس آئی پر سخت نکتہ چینی کی اور جب فوج نے اس پر اپنے سخت رد عمل میں کہا ’اس سے ملک کے لیے سنگین نتائج بر آمد ہوسکتے ہیں‘، تو انہوں نے اپنے سیکریٹری دفاع کو برطرف کر دیا۔
    اسی دوران سپریم کورٹ نے کہا کہ صدر آصف علی زرداری سمیت دیگر سیاسی رہنماؤں کے خلاف بد عنوانی سے متعلق کیس دوبارہ نا کھولنے کی پاداش میں انہیں وزارت عظمی کے عہدے کے لیے نا اہل قرار دیا جا سکتا ہے۔
    چیف جسٹس محمد افتخار چوہدری

    چیف جسٹس پر الزام ہے کہ وہ کارروائی خاص افراد کے خلاف کرتے ہیں
    پاکستان کے چيف جسٹس محمد افتخار چوہدری موجودہ حکومت کی پالیسیوں کی مخالفت کرتے رہے ہیں۔ وہ ان ججوں میں سے ایک ہیں جنہوں نے جنرل پرویز مشرف کے اقتدار پر سوال اٹھائے تھے اور جنہیں مسٹر مشرف نے سن دو ہزار سات میں برطرف کر دیا تھا۔ ان کی بحالی کے لیے وکلاء نے ایک طویل تحریک چلائی جس کے بعد مارچ سنہ دو ہزار نو میں انہیں دو بارہ بحال کیا گيا تھا۔
    چيف جسٹس کو ملک میں ایک وقت تک قانون کی پاسبانی کے لیے بڑی احترام کی نگاہوں سے دیکھا جاتا رہا اور تاریخ میں پہلی بار کسی فوجی جنرل کے خلاف آواز اٹھانے کے لیے ان کی تعریف بھی ہوتی رہی ہے۔ لیکن اب ان پر یہ الزام عائد کیا جا رہا ہے کہ وہ بعض خاص لوگوں کے خلاف ہی کارروائي کرتے ہیں۔
    پاکستان کی سپریم کورٹ تاریخی طور پر فوجی بغاوتوں کی حامی رہی ہے لیکن افتخار چوہدری نے ایسا نہیں کیا۔ لیکن بعض لوگوں کا کہنا ہے کہ حکومت اور آئی ایس آئی کے خلاف بدعنوانی کے عدالتی کارروائي میں انہوں نے کچھ زیادہ ہی سخت رویہ اپنایا ہے۔ عدالت میمو اور بدعنوانی کے کیس کے حوالے سے اس وقت حکومت کے پیچھے پڑی ہے۔ اب لگتا ایسا ہے جیسے فوج عدالت کی پشت پناہی کر رہی ہو تاکہ عدالت حکومت کو برطرف کر دے

    ……..

    Darveshh Darvesh
    @Laibaah1 The article on BBC seems to have been taken from Nawa-e Waqt or Jang. 😉 It’s so unlike BBC. Shame is the word! SHAME!

  • Dil jal ta hai, Agg ha Sena may Hamaray, Ahkhar Ya Adalatay Kyooo Jub saay PPP bane ha us ka Pecha Lage Howe hai. Bhutto ko Phanse, MOhtarma or Asif ka Oper Jhota Muqadmat, 11 Sal Qaid bagar koi Jurm Prove keya howa, Kha Gai who tha us waqat ka Garirat Mand Judge, Nahe who sub Bay Gairat tha, Jalan ha, Aag ha in ka Seno may, jalta hai, ka PPP kyoo Iqtadar may ahte ha, Mullah, Millitray, Judges, or Punjabi Journalist sara waqat PPP or PPP ki govt ka Pecha Paray hota hai, Pakistan Punjabd say start Hota ha, or punjab pay khatam hota ha, nahe chata Punjabi Judges, Punjabi Media achors, Punjabi Army ka Govt ho PPP ki, Kabhi 10000 NRO cases may say Asif ka Case Nikal na, Kabe Memo ka case Ochal na, ya ne ka in 4 salo may koi din ah say nahe guzra ka PPP govt ko kam ker nay deya gaya ho, Kha ha Asghar Khan Petition, Kha ha Hudabia paper Mill ka case, kha gaya GEO tax case etc, case chal nay hai to sirf PPP ka, Sindh may ah ka dekho kya halat ha, kisi din Balochistan ki tarha ya ka log be Hatiyar otha lay ga, samjo ah Punjabi Logo