Original Articles Urdu Articles

تاریخ نگاری کی آڑ میں تکفیری فرقہ واریت پھیلانے والی خاتون نگار سجاد ظہیر

نگار سجاد ظہیر کا نام برصغیر کے تکفیری خارجی فرقہ پرست حلقوں میں کافی معروف ہے ۔ اہلبیت سے بغض یعنی ناصبیت اور بنی امیہ کے ملوک کی خوشہ چینی اور یزید پلید و حجاج بن یوسف جیسے ظالموں کے دفاع میں ضعیف روایات کو حقیقت کا رنگ دے کر تاریخ مسخ کرنا کوئی ان سے سیکھے ۔ اہلسنت صوفی و بریلوی کو قبر پرست مشرک اور شیعہ کو کافر سمجھتی ہیں اور ملفوف الفاظ میں گاہے بگاہے اس کا اعتراف بھی کرتی ہیں ۔

حال ہی میں داعش اور النصرہ القاعدہ کے تکفیری خوارج نے شام میں حضرت عمر بن عبدالعزیز کی قبر اقدس کی بے حرمتی کر کے اس کا الزام مخالف فرقے پر دھر کر فرقہ وارانہ فساد پھیلانے کی کوشش کی – پاکستان میں اس جھوٹے پراپیگنڈے کو پھیلانے کی کوشش میں نگار سجاد ظہیر نے لشکر جھنگوی سپاہ صحابہ کے خوارج کے ہم آہنگ ہو کر نمایاں کردار ادا کیا ۔ ملاحظہ کیجیے اس تکفیری عورت کا نفرت بھرا پراپیگنڈا۔