Featured Original Articles Urdu Articles

سندھ یونیورسٹی کی پروفیسر ڈاکٹر عرفانہ ملاح پر جے یو آئی ف سندھ کے صدر کا بلاسفیمی کا الزام

ویمن ایکشن فورم، انسانی حقوق کمیشن پاکستان سمیت ملک بھر کے سیاسی و سماجی حلقوں کا عرفانہ ملاح سے اظہار یک جہتی اور جے یو آئی ایف سندھ کے صدر کی مذمت

حیدرآباد- سندھ یونیورسٹی جامشورو شعبہ کمیسٹری کی استاد پروفیسر ڈاکٹر عرفانہ ملاح پر جمعیت علمائے اسلام(ف) کے صدر راشد سومرو نے بلاسفیمی اور غداری کے الزامات عائد کیے ہیں اور حیدرآباد میں اپنی تنظیم کے عہدے داروں کو پروفیسر ڈاکٹر عرفانہ ملاح کے خلاف بلاسفیمی اور غداری کے الزامات کے تحت مقدمہ درج کرانے کی ہدائیت کی ہے

اس بات کا انکشاف پروفیسر ڈاکٹر عرفانہ ملاح نے اپنے ایک تازہ ترین ٹوئٹ میں کیا

جمعیت علمائے اسلام کے رہنما راشد سومرو نے اپنے حیدرآباد شہر ک امیر اعظم جہانگیری کو میرے خلاف ایف آئی آر درج کرانے کی ہدائت کی ہے- کیونکہ میں نے بلاسفیمی قانون کے تحت سکھر میں سندھ یونیورسٹی کیمپس میں شعبہ قانون کے اسٹنٹ پروفیسر پر بلاسفیمی کے الزام میں جھوٹے مقدمے کے اندراج اور حراست میں لینے کی مذمت کی تھی-راشد محمود جب سے عورت مارچ ہوا ہے تب سے مجھے نشانہ بنارہا ہے، یہ میرے لیے خطرہ ہے، سندھ حکومت نوٹس لے

انسانی حقوق کمیشن آف پاکستان نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے پریس ریلیز جاری کی ہے

انسانی حقوق کمیشن برائے پاکستان پروفیسر ساجد سومرو اور پروفیسر ڈاکٹر عرفانہ ملاح کے خلاف ابھرنے والی مذموم مہم پر تشویش کا اظہار کرتا ہے- دونوں اساتذہ نے اپنے ‘اظہار کی آزادی’ کے حق کو استعمال کرنے کے اور کچھ نہیں کیا ہے- جو بطور شہری ان کا حق اور بطور استاد ان کا فرض بنتا ہے

جو بھی شہری بولنے کی جرآت کرے اس کے خلاف بغاوت اور توہین جیسے الزام لگانا خوفناک حد تک عام وتیرہ بن چکا ہے

کہیں ایسا نہ ہو ہم بھول جائیں کہ جنید حفیظ، مشعال خان اور پروفیر خالد حمید یہ کے سب ایک من پسند،بے قابو نظام کے متاثرہ تھے جو علمی و فکری آزادی کو دبانے کے لیے بنایا گیا ہے

ان تمام مقدمات میں بشمول دو کے، ریاست کو اپنے شہریوں کا تحفظ یقینی بنانا چاہئیے اور توہین و بغاوت کے خلاف بنائے گئے قوانین کو آزاد آوازوں کو خاموش کرنے اور ذاتی پرخاش نکالنے کے لیے استعمال ہونے سے روکنے کے اقدامات اٹھانے چاہئیں

ویمن ایکشن فورم پاکستان کی تمام شاخوں نے پروفیسر عرفانہ ملاح سے اظہار یک جہتی کیا ہے

ویمن ایکشن فورم پاکستان کی تمام شاخیں پروفیسر عرفانہ ملاح پر توہین و غداری کے الزامات کی مذمت کرتی ہیں- ترقی پسند آوازوں کو خاموش کرنے کا کام وہ کرتے ہیں جو برے کاموں میں ملوث ہوتے ہیں- ہم سندھ حکومت اور مقامی پولیس سے پروفیسر ڈاکٹر عرفانہ ملاح کی حفاظت فوری طور پریقینی بنانے کا مطالبہ  کرتے ہیں۔