Featured Original Articles Urdu Articles

PPP and Education In Sindh

After decades Of neglect under various dictators and their creations like PML N and MQM, education in Sindh finally improved under PPP.

سندھ پر 1990ء سے اکتوبر 1993ء تک مسلم لیگ نواز پلس ایم کیو ایم, 1997 سے اکتوبر 1999ء تک مسلم لیگ نواز پلس ایم کیو ایم کی حکومتیں رہیں اور پھر 2002ء سے 2007ء تک مسلم لیگ ق پلس ایم کیو ایم کی حکومت رہی

یہ دس سال بنتے ہیں اور ان دس سالوں میں وفاق اور صوبے دونوں میں 8 سال زبردست طاقتور حکومتیں تھیںانہوں نے کتنی یونیورسٹیاں قائم کی تھیں؟ کتنے ہسپتال قائم کیے تھے؟ ایک بڑا فریب یہ ہے کہ سندھ میں پی پی پی کے دشمنوں نے جنرل ضیاء کے 11 سال اور پوسٹ ضیاء دور میں دس سال یعنی 21 سال حکومت کی جبکہ پی پی پی نے 1988ء سے 1990ء، 1993ء سے 1997ء اور پھر 2008ء سے 2013ء اور اب کے 18 ماہ کی حکومتیں کیں جبکہ اس دوران یہ تین بار وفاق میں معمولی سی اکثریت کے ساتھ حکومت میں تھی اور دو بار وفاق کے بغیر یہ کُل ملا کر 11 سال 18 ماہ حکومت بنتی ہے اور اگر بھٹو صاحب کے حکومت کے سال شامل کیے جائیں تو یہ 16 سال بنیں گے تو 16 سال دو دفعہ وفاق کے بغیر کے 6 سال اور 8 ماہ بھی شامل ہیں پی پی پی کا سنہری دور بھٹو کا دور سمجھا جاتا ہے

پی پی پی سندھ میں 16 سالوں میں سندھ کی عوام کو جو دے پائی، اُس کے مقابلے میں مسلم لیگ نواز، مسلم لیگ ق اور پی ٹی آئی جو پی پی پی دشمنی پر استوار جماعتیں ہیں سب کو فوج، عدلیہ اور سول نوکر شاہی اور طاقتور حامی میڈیا میسر رہا 21 سال حکومت کرکے سندھ کی عوام کو کیا دے پائے؟ یہ موازانہ دودھ کا دودھ اور پانی کا پانی کردے گا

یاد رہے کہ کے الیکڑک کی نجکاری بھی ایم کیو ایم کے حکومت میں رہتے ہوئے ہوئی تھی

اکیس سالہ اقتدار میں ایم کیو ایم سندھ کے سب سے بڑے روایتی اسٹبلشمنٹ دوست جاگیردار اور قبائلی سرداروں اور جاگیردار پیروں کے ساتھ اتحاد میں رہی

کیا کبھی ایم کیو ایم نے سندھ کی مبینہ تباہی اور پسماندگی کا زمہ دار 21 سال اقتدار میں رہنے والوں کو ٹھہرایا؟ کیا کبھی اردو اسپیکنگ مبینہ مہاجر قوم کی پسماندگی کا الزام 21 سال اقتدار میں رہنے والی جماعتوں کو دیا؟ عوام کے شعور کو پسماندہ کرنے کی کوشش کرنے والے پاکستان کی سندھ کے جغرافیہ اور لینڈ اسکیپ سے ناواقف، تاریخ سے نابلد اور اخباری سرخیوں کی بنیاد پر سیاسی موقف بنانے والی اربن باتونی حلقوں

Urban chattering sections

کو تو بیوقوف بناسکتے ہیں عوام کو نہیں

بعض حضرات پوچھتے ھیں پیپلز پارٹی سندھ پر کئی سالوں سے حکومت کر رہی ھے وہاں کیا کیا؟ آج صرف تعلیم کے بارے میں بتاتا ھوں

یونیورسٹیوں کی لسٹ جو پیپلز پارٹی کی سندھ حکومت نے 2008 سے 2018 تک قائم کیں۔

شہید محترمہ بینظیر بھٹو میڈیکل یونیورسٹی لاڙڪہ 2008
محمد علی جناح یونیورسٹی کراچی کراچی 2009 اسلام آباد بزنس، انجینئرنگ اور ٹیکنالوجی
 سندھ انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز کراچی کراچی 2009
 کراچی اسکول برائے بزنس اینڈ لیڈر شپ کراچی 2009 (2012)
 حبیب یونیورسٹی کراچی 2009 (2014) * آزادانہ فن اور سائنس سائنس
 بینظیر بھٹو شہید یونیورسٹی کراچی 2010 (2007) *
شہید بینظیر بھٹو یونیورسٹی، نوابشاہ بینظیرآباد 2010
 انسٹی ٹیوٹ آف ٹیکنالوجی KASB کراچی 2011

2012:

 گمباٹ انسٹی ٹیوٹ آف میڈیکل سائنسز خیرپور
 سندھ میڈیکل یونیورسٹی کراچی میڈیکل
شہید ذوالفقار علي بھٹو یونیورسٹی آف قانون کراچی قانون
 ڈی ایچ اے سوفا یونیورسٹی کراچی 

نزیر حسین یونیورسٹی کراچی 2012 بزنس

2013:

 پیپلز یونیورسٹی میڈیکل اینڈ ہیلتھ سائنسز برائے خواتین نوابشاہ میڈیکل
شہید بینظیر بھٹو یونیورسٹی آف ویٹرنری اینڈ اینیمل سائنسز کراچی

 شہید بینظیر بھٹو سٹی یونیورسٹی کراچی کراچی
 شہید بینظیر بھٹو دیوان یونیورسٹی کراچی جنرل
 حیدرآباد انسٹی ٹیوٹ آف آرٹس، سائنس اور ٹیکنالوجی حیدرآباد سائنسز
قلندر شہباز یونیورسٹی آف جدید سائنسز

سندھ یونیورسٹی کمپس دادو
مخدوم محمد زمان طالب المولی لا کالج ہالہ حیدر آباد

SOURCE: SINDH EDUCATION FOUNDATION GOVERNMENT OF SINDH

(Post is compiled from Amir Raza, Aamir and Asrar Hussain)