Original Articles Urdu Articles

پاکستان پیپلزپارٹی آرمی ایکٹ میں مجوزہ ترمیمی بل کے مسودے میں ترامیم کی سفارشات تیار کرے گی – پی پی پی سنٹرل کمیٹی کا اعلامیہ

پاکستان پیپلزپارٹی نے آرمی ایکٹ میں حکومتی ترمیمی مسودہ کے بل میں ترمیمی سفارشات لانے کا اعلان کردیا- آرمی ایکٹ کے قانون کو پبلک کرنے کا مطالبہ کردیا- پی پی پی کے رہنما میاں رضا ربانی کی پارٹی رہنماؤں کے ہمراہ پریس کانفرنس

پاکستان پیپلزپارٹی کی سنٹرل کمیٹی کا ہنگامی اجلاس بلاول ہاؤس کراچی میں 5جنوری کی شام منعقد ہوا- اجلاس کی صدارت چئیرمین پاکستان پیپلزپارٹی بلاول بھٹو زرداری نے کی- اجلاس کے بعد پی پی پی کے رہنماء میاں رضا ربانی نے اجلاس بارے پریس بریفینگ دیتے ہوئے صحافیوں کو بتایا کہ پاکستان پیپلزپارٹی سمجھتی ہے کہ حکومت کی جانب سے آرمی ایکٹ میں ترمیم کا جو بل پارلیمنٹ میں پیش کیا ہے وہ سپریم کورٹ کی دی گئی ہدایات کے مطابق نہیں ہے- اس لیے حکومتی بل میں ترمیم کرنا ہوگی

میاں رضا ربانی کا کہنا تھا کہ آرمی ایکٹ عوامی دستاویز ہے جسے حکومت نے کلاسفائیڈ رکھا ہوا ہے- حکومت مخفی دستاویز کو پبلک کرے- پاکستان پیپلزپارٹی آرمی ایکٹ میں تبدیلی کے لیے حکومت کے ترمیمی بل میں ترمیمی سفارشات کی تیاری کرے گی اور اس پر اتفاق رائے پیدا کرنے لیے حزب اختلاف کی دیگر جماعتوں سے رابطہ کیا جائے گا- پاکستان پیپلزپارٹی نے میاں رضا ربانی، شیری رحمان وغیرہ پر ایک کمیٹی قائم کی ہے جو ترمیمی سفارشات تیار کرے گی اور اپوزیشن رہنماؤں سے ملاقاتیں کرے گی

سی ای سی کے اجلاس میں شریک پی پی پی کے ایک سینئر رہنماء نے نام نہ ظاہر کرنے کی شرط پر بتایا سی ای سی کا اجلاس بلاول بھٹو زرداری کی صدارت میں شام کو شروع ہوا تو سنٹرل ایگزیگٹو کمیٹی کے اراکین نے آرمی ایکٹ میں حکومتی ترمیمی بل کے مسودے پر شدید تحفظات کا اظہار کیا جبکہ سی ای سی کے اراکین میں شامل قانونی ماہرین اور سابقہ پارلیمینٹرین سی ای سی کے اراکین کو بتایا کہ سپریم کورٹ نے آرمی ایکٹ میں ترمیم کرنے کے حوالے سے جو ہدایات دی تھیں حکومت کی طرف سے پیش کردہ بل کی کئی شقیں اس سے متصادم ہیں جن کو بدلنے کی ضرورت ہے۔

کئی ایک اراکین نے حکومت اور مسلم لیگ نواز کی جانب سے ترمیمی بل کو جلد بازی میں منظور کرانے کی کوششوں پر سخت تحفظ کا اظہار کیا جبکہ اراکین سی ای سی نے چئیرمین بلاول بھٹو زرداری کی طرف سے آرمی ایکٹ میں ترمیم کے لیے پارلیمانی پروسیچر کواختیار کرنے پر حکومت کو مجبور کرنے کے کامیاب اقدام کو سراہا- پی پی پی کے زرایع کا کہنا ہے کہ پی پی پی کی سنٹرل ایگزیگٹیو کمیٹی کے اجلاس کے دوران سابق صدر آصف علی زرداری کی مشاورت بھی شامل رہی

پی پی پی کی سنٹرل ایگزیگٹو کمیٹی کے اجلاس کی اندرونی کاروائی کی روداد سے پتا چلتا ہے کہ پی پی پی نے حکومتی ترمیمی بل کو جوں کا توں منظور نہ کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے اور اب اس بل کے فوری منظور ہونے کے امکانات کم رہ گئے ہیں۔