Original Articles Urdu Articles

نمرتا کماری قتل کیس کے حقائق کیوں چھپائے جا رہے ہیں؟

نمرتا کماری کی موت جنسی زیادتی کے بعد گلا گھونٹ کر قتل کرنے سے نہیں ہوئی. پاکستان ٹوڈے میں شایع ہونے والی خبر جھوٹ کا پلندہ ہے. میڈیکل رپورٹ میں نہ تو جبری طور پر ریپ کا زکر ہے اور نہ ہی تشدد کیے جانے کا

پاکستان ٹوڈے جو کہ عارف نظامی کی ادارت میں شایع ہوتا ہے میں نمرتا کماری کے بارے میں جھوٹی رپورٹ شایع کرنے کا مقصد کیا ہے؟

جوڈیشل انکوائری کی رپورٹ آنے سے پہلے ایک جھوٹی میڈیکل رپورٹ کو پھیلانے کا مقصد کیا بنتا ہے؟

پروفیسر امر سندھو اس بے بنیاد پروپیگنڈا خبر کے سامنے آنے پر کچھ سوالات اٹھاتی ہیں

ایس پی اور ڈی آئی جی لاڑکانہ بنگش اور عرفان بلوچ سندہ کے انوار رائو ہیں اور ان کے آقا سندہ حکومت کے بجائے اوپر والے ہیں۔

میں دو چیزیں سمجھنے سے قاصر ہوں کہ لاڑکانہ میں اس کیس کو لے کر قسم کی سیچوئشن کیوں پیدا کی جا رہی ہے کہ لوگ حکومت سے نفرت کریں۔

باہر کسی بھی سیاسی بندے کا اس کیس کے اندر براہ راست ہاتھہ کا کوئی شائبہ نہیں۔

پولیس نے اب تک کیس کو کیوں مس ہینڈل کیا؟

جب وزیراعلی کی ہدایت پہ عدالتی کاروائی شروع ہوئی تو میڈیا سنسنی پھیلانے کا کام کیوں کر رہا ہے؟

یہ پوسٹ مارٹم کی رپورٹ پولیس کی کسٹڈی میں ہونی چاہیے وہ کیسے لیک ہو رہی ہیں

کئی سوال ہیں کہ کس کو بچایا جا رہا ہے کس کو پھنسایا جا رہا ہے

کیا سیاسی عزائم ہیں۔اس سنسنی خیز خبروں سے سندہ کے عوام کو کیوں جذباتی بنا کر عدالتی انکوائری سے پہلے سڑکوں پہ لایا جا رہا ہے۔؟

اور آخر میں کہیں یہ اس لیئے تو نہیں کہ عدالتی فیصلے کو تکراری بنا دیا جائے

کیا اس کا مقصد اس خاص گروہ کو بچانا تو نہیں جو سندھ میں ہندو لڑکیوں کے اغوا اور زبردستی مذہب تبدیل کروانے میں ملوث ہے؟ یا اس کالعدم دہشت گرد گروہ کا تحفظ کیا جا رہا ہے جو سندھ میں ہندو عبادت گاہوں پر حملوں اور ہندو برادری کی ٹارگٹ کلنگ میں ملوث ہے؟