Featured Original Articles Urdu Articles

کمرشل میڈیا کی کرائے پر دستیابی – عامر حسینی

پاکستان کے اندر کمرشل میڈیا مافیا کا نسبتاً نیا سوشل میڈیا ایڈونچر ‘نیا دور’ ویب سائٹ ہے

یہ پروجیکٹ ہمیں اور دی فرائیڈے ٹائمز بلاگ–ٹی ایف ٹی کا جدید ایڈیشن لگتا ہے اور یہ رضا رومی اور ان کے دیگر ساتھیوں کا منصوبہ ہے- رضا رومی حال ہی میں پارک انڈی میڈیا کے ڈائریکٹر بھی بنے ہیں جو امریکی ڈونر تنظیم ہے اور اس کا ماٹو مین سٹریم میڈیا سے ہٹ کر امریکہ سمیت پوری دنیا میں آزاد ویب میڈیا کو پروان چڑھانا ہے

پارک انڈی میڈیا نے سیریا میں اسد مخالف ایکٹویٹیز پر مشتمل جرنلزم کو پروان چڑھایا یوکرائن میں بھی اس کے روٹ نظر آتے ہیں

رضا رومی ہی ‘نیا دور ٹی وی’ کے ایڈیٹر انچیف ہیں

میں نے ‘نیا دور ٹی وی’ کے گزشتہ تین ہفتوں کی سوشل میڈیا ایکٹوازم کا جائزہ لیا تو میرا تاثر یہ بنا کہ یہ پروجیکٹ بھی بنیادی طور پر نواز لیگ کی پروجیکشن آرگن کے طور پر کام کررہا ہے

آج کل اس کا زور مریم نواز کی پروجیکشن پر ہے-تین ہفتوں میں درجنوں پوسٹیں وژیول اور ٹیکسٹ پوسٹ مریم نواز کی پروجیکشن کرتی نظر آتی ہیں اور ایک دن میں بعض اوقات چار سے پانچ پوسٹ بھی نظر آتی ہیں

متحدہ اپوزیشن کے جلسوں کی کوریج کے حوالے سے نیا دور کا فوکس مریم نواز رہیں اور اس دوران بلاول بھٹو اور پیپلزپارٹی کی کوریج قریب قریب بلیک آؤٹ تھی

عمران خان کے دورہ امریکہ کے دوران نیا دور نے ایک وڈیو کلپ بے نظیر بھٹو کے دورہ امریکہ کے وقت امریکی کانگریس سے خطاب کی پوسٹ لگائی، کیونکہ شاید نواز شریف کی ایسی کوئی ویڈیو موجود نہیں تھی

ایک انگریزی میں بات چیت شیری رحمان کی دی، اس کی دو وجوہات ہوسکتی ہیں، ایک تو شیری رحمان کے نظریات کافی کمرشل لبرل مافیا کے قریب ہیں اور دوسرا شیری رحمان کی این جی او جناح انسٹی ٹیوٹ آف پالیسی اینڈ اسٹڈیز کے ڈائریکٹر اُن دنوں میں رہے جب اس انسٹی ٹیوٹ کے ملازمین کی تنخواہیں ایک خفیہ ایجنسی کے شیری رحمان کے شوہر کی ملکیت رہے تعمیر بنک میں کھولے گئے اکاؤنٹ سے دیے جانے کی خبریں عام ہوئی تھیں

باقی بلاول بھٹو اور ان کی پارٹی کے بارے میں نیادور کی خاموشی بہت واضح ہے

نیا دور کی رانا ثناءاللہ، خاقان عباسی، خواجہ سعد رفیق اور سلمان رفیق اور نواز شریف کی گرفتاریوں پر پوسٹ ان رہنماؤں کی گرفتاریوں کو سیاسی انتقام اور ناکردہ گناہوں کی سزا بھگتنے والے قرار دیتی ہیں

لیکن پیپلزپارٹی کی گرفتار قیادت کے بارے میں جب سے یہ ویب سائٹ وجود میں آئی تب سے کوئی خاص پوسٹ نظر نہیں آتیں

یہاں تک کہ جتنی کوریج نیادور پر افراسیاب خٹک اور محمود اچکزئی کو ملی اتنی اسفند یار ولی کو بھی نہیں ملی

نیا دور کی ویب سائٹ کا دوسرا اہم پہلو جو عمران خان کے دورہ امریکہ کے اعلان سے دیکھنے کو ملا وہ یہ تھا کہ دورے سے پہلے اس دورے کو ناکام بتانے کی کوشش ہوئی، چیف آف آرمی سٹاف اور ڈی جی آئی ایس آئی کے ہمراہ جانے پر تنقید شروع ہوئی

دورے کے وقت استقبال کو ایشو بنایا گیا اور ٹرمپ و عمران ملاقات کے بعد یہ تاثر دیا گیا کہ عمران اور فوجی قیادت لیٹ گئی

نیادور پر یہ تبصرے دیکھ کر مجھے حیرت اس لیے ہوئی کہ کہ مشرف دور میں ٹی ایف ٹی تو پاکستانی فوجی قیادت کے امریکیوں سے تعاون کی تعریف کرتے نہیں تھک رہا تھا تو اب نیا دور ویب پر یہ قابل اعتراض کیوں ہوگیا؟

پاکستان میں کمرشل میڈیا مافیا کا اینٹی اسٹبلشمنٹ و آزادی صحافت بریگیڈ نے جمہوریت، آزادی رائے، انسانی حقوق کی رضاکارانہ خدمت کے نام پر اسقدر گھٹیا کمرشل ازم کیا کہ کچھ پردہ بھی نہ رہا، اس لیے حکومت اور ریاست کے جمہوریت، پریس اور سیاست پر حملے بھی آسان ہوگئے ہیں