Featured Original Articles Urdu Articles

نواز لیگ رحمت شاہ آفریدی سے معافی مانگے اور ہرجانہ ادا کرے – عامر حسینی

ایک وہ بھی زمانہ تھا جب نواز شریف ‘لاڈلا’ تھا اور جہادی اُسے اپنا ‘بندہ’ سمجھتے تھے تو اُس نے مدینہ منورہ کے ایک ہوٹل میں سامنے بیٹھ کر اُسامہ بن لادن سے بے نظیر کی حکومت کو گرانے کے لیے موٹی رقم لی بے نظیر بھٹو کے خلاف تحریک عدم اعتماد پیش کی گئی جو ناکام ہوئی یہ ساری سازش رحمت شاہ آفریدی ایڈیٹر دی فرنٹیئر پوسٹ میں شایع کردی

رحمت شاہ آفریدی اپنے اخبار میں نواز شریف اور جن کا وہ لاڈلا تھا ان کے منشیات کے نیٹ ورک سے تعلق کو بار بار چھاپتا اور ایک بار تو ایک لسٹ بھی ‘لاڈلا’ بنانے والوں کی بھی چھاپ دی کہ وہ کس طرح سے ڈرگ ریکٹ کا حصہ ہیں

آفریدی کو نواز شریف نے کبھی معاف نہیں کیا، نہ ہی لاڈ جتانے والوں نے اور نہ ہی جہادیوں نے

پنجاب اسمبلی کے سامنے سے گزرتے ہوئے 99ء میں اینٹی نارکوٹکس نے رحمت شاہ آفریدی کی گاڑی کے مبینہ خفیہ خانوں سے منشیات برآمد کی اور نائن سی سمیت دیگر دفعات کے تحت مقدمات درج کرلیے گئے

مسلم لیگ نواز کے رہنماء اچھے سے جانتے ہیں کہ کیسے انہوں نے اسٹبلشمنٹ کی پوری طاقت اور ملک میں بنیاد پرست جہادیوں کی تائید کے ساتھ اپنے وقت کے سب سے بڑے اور توانا جمہوریت پسند اخبار کے دلیر و بے باک چیف ایڈیٹر رحمت شاہ آفریدی کو منشیات فروش ثابت کرنے کا ڈرامہ رچایا 

رحمت شاہ آفریدی جیل چلا گیا تو پیچھے دی فرنٹیئر پوسٹ بھی زوال پذیر ہوگیا اور 2001ء میں بلاسفیمی کا جھوٹا الزام لگاکر پشاور میں اس اخبار کا پریس اور دفتر ہی جلادیا گیا

رحمت شاہ آفریدی کی رہائی آصف علی زرداری نے صدر مملکت بننے کے بعد اقدامات سے ممکن بنائی

نواز شریف اور ان کے دیگر ساتھیوں نے آج تک نہ تو رحمت شاہ آفریدی سے معافی مانگی اور نہ ہی قوم کے سامنے اظہار ندامت کرتے ہوئے قوم کو یہ بتایا کہ وہ ماضی میں رحمت شاہ آفریدی کو اسٹبلشمنٹ اور بنیاد پرستوں کے ساتھ ملکر منشیات کے مقدمے میں پھنسانے اور اُس کے اخبار کو تباہ کرنے پر شرمندہ ہیں

نواز شریف کو رحمت شاہ آفریدی کے مالی نقصان اور اخباری گروپ کی تباہی کے ازالے کے لیے ہرجانہ ادا کرنا چاہیے اور اُن سے اعلانیہ معافی مانگنی چاہیے

پاکستان میں جو کمرشل لبرل مافیا رانا ثناءاللہ کو آصف زرداری کے برابر ٹھہرارہا ہے تو اُسے چاہیے وہ نواز شریف اور مسلم لیگ کی دیگر قیادت سے کہے کہ وہ آصف علی زرداری، بے نظیر بھٹو سمیت سیاسی رہنماؤں اور کارکنوں کے خلاف جھوٹے مقدمات کے قیام پر معافی مانگیں