Original Articles Urdu Articles

ڈیرہ اسماعیل خان میں دو شہری شیعہ شناخت کے سبب جینے کے حق سے محروم کردیے گئے

ڈیرہ اسماعیل خان میں نامعلوم حملہ آوروں نے فائرنگ کرکے دو شہری ہلاک کرڈالے۔ ایک شہری شیعہ ذاکر دوسرا شیعہ عزادار تھا۔

کاروائی لشکر جھنگوی کے دہشت گردوں کی دکھائی دیتی ہے جو سپاہ صحابہ پاکستان کا عسکری دہشت گرد ونگ ہے اور اس کا سب سے بڑا ہدف شیعہ کمیونٹی ہے۔

لشکر جھنگوی سے وابستہ دہشت گرد پاکستان میں ابتک 26 ہزار سے زائد شیعہ مسلمانوں کو نشانہ بنا چکے ہیں۔ جبکہ ان کی جانب سے صوفی سنی ، کرسچن، احمدی ، اسماعیلی شیعہ اور دیگر گروہوں کو بھی نشانہ بنایا گیا ہے۔


پاکستان میں شیعہ مسلمانوں کی آہستہ رو نسل کشی کی باقاعدہ مہم موجود ہے جس کا ایک حصہ ٹارگٹ کلنگ بھی ہے۔


ڈیرہ اسماعیل خان میں یہ ایک طرف شیعہ نسل کشی کی مہم کا حصہ تو ہے ہی ساتھ ہی یہ بالواسطہ سرائیکی بولنے والی آبادی کو بھی کمتر بنانے کا سبب بن رہی ہے۔