Original Articles Urdu Articles

لال مسجد کے وکیل چودھری نثار کی دھوکہ دہی

nisar-raja-nasir-abbas-640x426

انگریزی روزنامہ ڈان کی ویب سائٹ پہ بروز منگل مورخہ 30 اگست 2016ء کو ایک خبر پوسٹ کی گئی جس کے مطابق وفاقی وزرات داخلہ کی جانب سے ایک جاری کردہ ایک پریس ریلیز میں بتایا گیا کہ وفاقی وزیر داخلہ چودھری نثار علی خاں کی جانب سے شیعہ تنظیم مجلس وحدت المسلمین سے کوئی وعدے نہیں کئے گئے اور نہ ہی وفاقی وزیر داخلہ کی مجلس وحدت المسلمین کے مرکزی جنرل سیکرٹری راجہ ناصر عباس کو ان کے ان مطالبات کی منظوری کی یقین دھانی پہ اسلام آباد میں لگے بھوک ہڑتالی کیمپ کو ختم کرنے کے لئے کہا گیا تھا-وزرات داخلہ کا کہنا تھا کہ چوہدری نثار علی خاں 5 اگست کو ہسپتال میں ملنے راجہ ناصر عباس کو گئے ضرور تھے اور ایم ڈبلیو ایم کے مطالبات صوبائی حکومتوں تک پہنچانے کی بات ضرور کی تھی اور یہ بھوک ہڑتالی کیمپ کے خاتمے سے مشروط نہ تھی-

یہان سوال یہ جنم لیتا ہے کہ آخر وفاقی وزرات داخلہ کو ایسی کیا ضرورت آن پڑی تھی کہ وہ شیعہ کمیونٹی کی ایک نمائندہ تنظیم کی جانب سے شیعہ کمیونٹی کی نسل کشی ، امتیازی مذہبی سلوک کے خاتمے جیسے مطالبات پہ کان دھرنے کی بجائے ان مطالبات کو شیعہ کمیونٹی کے سلگتے ہوئے ایشوز ہی ماننے سے انکاری ہولیا جائے-

اس وقت صورت حال یہ ہے کہ شیعہ کمیونٹی کے اکثر علمائے کرام اور زاکرین پہ ان کے ضلع سے باہر جانے پہ پابندی ہے-شیعہ کمیونٹی کو مجالس عزاء اور جلوس ہائے عزاداری کے غیر رجسٹرڈ مگر عرصہ دراز سے ہونے والے رسمی اجتماعات پہ پابندی لگادی گئی ہے جبکہ اس پابندی کو نہ ماننے والوں کے خلاف مقدمات کا اندراج کیا گیا ہے اور درجنوں شیعہ جیلوں میں بند ہیں-یہ شیعہ کمیونٹی کو ان کے عقائد و خیالات اور شعائر مذہبی کی آزادانہ ادائیگی سے روکنے کی سازش ہے-

المناک بات یہ ہے کہ ایک طرف تو شیعہ کمیونٹی اور صوفی سنّی کمیونٹی کو عاشورہ محرم اور عید میلادالنبی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے جلوس ، مجالس و محافل کے انعقاد کے خلاف مہم جاری ہے-جبکہ دوسری طرف تکفیری دیوبندی دہشت گرد تنظیم اہلسنت والجماعت کو شیعہ سمیت نان تکفیری کمیونٹیز کے خلاف منافرانہ و فرقہ وارانہ شدت پسند نطریات پھیلانے کی کھلی چھٹی ملی ہوئی ہے-اس کا سربراہ اورنگ زیب فاروقی ، سرپرست اعلی محمد احمد لدھیانوی اور دیگر تکفیری ، فرقہ پرست دیوبندی مولویوں کو تحریر وتقریر دونوں کی آزادی سے اجازت دی جارہی ہے-ان پہ اپنے ضلع سے باہر نہ جانے پابندی بھی عائد نہیں کی جارہی ہے-
بلکہ وزیراعظم نواز شریف و چیف منسٹر پنجاب شہباز شریف نے تو اس کالعدم تنظیم سے سٹریٹجک شراکت داری اختیار کررکھی ہے-اور جب ان کے خلاف کاروائی کا سوال آتا ہے تو مسلم لیگ نواز اس کالعدم تنظیم کو بچانے کے لئے سب سے آگے ہوتی ہے-یو ٹیوب پہ موجود اورنگ زیب فاروقی کی اشتعال انگیز تقریروں کا ریکارڈ موجود ہے-جن میں سے ایک اس پوسٹ کے ساتھ لنک کی جارہی ہے –اس تقریر کو سننے سے عام آدمی بھی اورنگ زیب فاروقی جیسوں کی اشتعال انگیزی کو صاف پہچان سکتا ہے-لیکن اس کے باوجود اورنگ زیب فاروقی اور ان کے ديگر رہنماء آزادی سے عاشورہ و عید میلادالنبی صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کے خلاف پروپیگنڈا جاری رکھے ہوئے ہے-