Editorial Original Articles

Human rights activist’s response to hate campaign against liberal Pakistani blog LUBP

 

I am a human rights activist based in the US with a particular interest in issues of human rights and minority rights in Pakistan, my country of ancestry.

I am also proud to be associated with Let Us Build Pakistan, a pro-rights blog, known for its liberal, principled and non-populist discourse. Its editors and other thought leaders such as Ali Abbas Taj, Khurram Zaki, Rusty Walker and Dr Abbas Zaidi are a major source of inspiration for me and other rights activists across the world.

Pakistan as most of us know is currently experiencing major violence and terrorism at the hands of banned

Deobandi Takfiri terrorist groups variously known as Taliban, Lashkar-e-Jhangvi, Sipah-e-Sahaba, Ahle Saunnat Wal Jamaat, Ahrar and Jundallah. In addition to killing at least 23,000 Shia Muslims, these Deobandi militants have also killed 45,000 Sunni Sufis or Barelvis as well as hundreds of Ahmadis, Christians, Hindus and other community members.

However, in the mainstream media, the common Deobandi Takfiri identity of the perpetrators and the Sunni Sufi or Shia identity of their victims is often ignored or diluted.

At the Let Us Build Pakistan or LUBP blog, whenever some of us want to raise a voice against Shia Genocide or Sunni Sufi Genocide, there is no shortage of hate mongering bigots on social media who call us sectarian Sufis or sectarian Shias or resort to false Sunni-Shia or Saudi-Iran binaries to obfuscate Deobandi terrorism against all other communities. Unfortunately some of the anti-LUBP bigots also camouflage themselves as liberals or leftists but are often seen promoting Deobandi hate clerics such as Tahir Ashrafi and Ludhyanvi as prophet of peace.
Recently, one of these hate accounts, which goes by the fake ID of “LUBP xposed” started to threaten me on twitter. This account and its allies are determined to put me and other rights activists and intellectuals in harm’s way. As per these accounts, everyone from Allama Syed Jawad Naqvi to American scholar Vali Nasr are part of a LUBP conspiracy to undermine certain dubious elitist liberal champions of Pakistan – you know the same liberals who seek common grounds with ISIS-affiliated banned terrorist organisations such as ASWJ or promote known anti-Ahmadi cleric Tahir Ashrafi as a progressive cleric.

As per these deluded sectarian hate accounts, even US Secretary of State John Kerry is behind LUBP and is running the twitter handle of Abdul Nishapuri, the LUBP’s former editor before Mr Ali Abbas Taj.
Abdul Nishapuri, a multiuser account or pen-name, had to be deactivated in January 2013 when one of the account’s key contributors Irfan Khudi Ali was killed in a Deobandi terrorist attack on Shia Hazaras in Quetta. Originally the same account was operated by a few activists of Pakistan Peoples Party who later on left the blog for personal reasons or differences with the PPP.

While Khudi Ali was martyred by Deobandi militants in January 2013, the legacy goes on. In addition to other colleagues, I am proud to be a co-user of the Abdul Nishapuri account after Khudi Ali’s martyrdom, and anything that helps me in spreading the discourse of Shaheed Khudi Ali, Shaheed Professor Sibte Jafar, Ali Abbas Taj, Khurram Zaki, Aamir Hussaini, Rusty Walker and other champions of human rights is a matter of great pride to me. In this movement, I am also inspired by characters such as Anne Frank, Mehzar Zehra and Malala Yusufzai who are symbols of resistance against genocide at the hands of the Nazis and the modern day Nazis, i.e., Deobandis.

To those fakesters who pose as liberals but attack Shia and Sunni Sufi rights activists, I have this much to say.
You are enablers of genocide and terrorism. These deluded hate accounts you operate or manipulate are now engaging in cyber terrorism and incitement to violence.

Recently, someone behind the anti-LUBP campaign is also launching a cyber-attack on the LUBP website from Holland. It has been reported that a prominent member of this group, possibly an employee of the Cable and Wireless Company alternates between Holland and the UK for his job. Cyber terrorists and hate mongers are openly engaging in incitement to violence against prominent Shia professionals. Even prominent Shaheeds like Dr. Ali Haider, Professor Sibte Jafar and Irfan Khudi Ali’s names are being dragged through the mud to incite violence against the remaining members, supporter or well-wishers of the LUBP group.

This cyber terrorist, LUBP xposed, is obsessed that I am operating the Abdul Nishapuri twitter handle. I proudly say ‘yes’, and dare him to reveal his identity .

I will continue to raise my voice as clearly against Sunni Sufi and Shia Genocide and Christian, Ahmadi and Hindu persecution at the hands of Deobandi fanatics. I have no qualms in standing for the cause of human rights and liberal values if it means exposing the opportunist elitist liberals who are misrepresenting these causes to fill their pockets and gain cheap fame.

To all peace loving Pakistanis, Americans and other people, I have only one appeal. Please step forward and help the Let Us Build Pakistan blog through your moral, political and ideological support. Help us in building a progressive, peaceful and pluralistic Pakistan, free from Deobandi Takfiri and all other forms of terrorism, free from genocide of Shias, Sunni Sufis and massacres of Ahmadis, Christians and other communities. May peace prevail in Pakistan.

About the author

Taj

Ali Abbas Taj is the Editor of Let Us Build Pakistan.
@aliabbastaj on Twitter

2 Comments

Click here to post a comment
  • Ali Abbas Taj’s conversation with Aamir Hussaini
    بینا سرور : نجم سیٹھی کی مجبوری ہے کہ وہ ہر کسی سے بناکر رکھے ، اسے زندہ رہنا ہے ، تبھی تو وہ لدھیانوی اور اشرفی کو میڈیا پر ان رکھتا ہے
    علی عباس تاج : نجم سیٹھی کی کیا مجبوری ، اگر ایسا ہی ہے تو صحافت چھوڑ کر کوئی اور کام کرلے ، وہ کوئی صحافت سے ہونے والی کمائی پر انحصار کرتا ہے
    رضا رومی نے جب اشرفی کے ساتھ ایکسپریس نیوز چینل پر کام شروع کیا تو میں نے ان سے بھی پوچھا تھا کہ ایسا کیوں کررہے ہیں ؟ تو ان کے دلائل بھی یہی تھے
    مجھے بڑی حیرت ہوئی تھی اور پھر رضا رومی پر انھی قوتوں نے حملہ کیا جن کے ساتھ وہ بناکر رکھنے کو زندہ رہنے اور پاکستان میں مین سٹریم لائن پر رہنے کے لئے ضروری خیال کررہے تھے
    نہ جانے ان جیسے لوگ کیوں اپنے قاتلوں سے مسیحائی کی امید باندھتے پھرتے ہیں
    علی عباس تاج ایڈیٹر انچیف ایل یو بی پاک کا عامر حسینی سے مکالمہ

    —–

    چند اور باتیں کھری کھری
    احمد
    وقاص گورایا صاحب ، میری آئی ڈی پبلک ہے کوئی بھی دیکھ سکتا ہے ، یہ آپ نے صاف صاف جھوٹ بولا ہے ، دوسرا میں نے بلاگ لکھا ہے ، میں برملا ایل یو بی پاک کے موقف کو سپورٹ کررہا ہوں ، آپ نے جعلی فیک بلاگ جہاں پر علی ناطق کو دیوبندی مافیا جوائن کرنے کا لکھا گیا اس کا نام بھی غلط لکھا اور ایک لمبی کنورشن میں اس پر تفصیلی بات ہوگئی ہے
    بینا سرور گروپ سے ایل یو بی پاک کی کوئی لڑائی میری اطلاع کے مطابق کراچی سٹیزن فورم فار پیس کی صدارت پر نہیں چل رہی ، کیونکہ وہاں ایل یو بی پاک کے ساتھ منسلک صرف ایک آدمی ہے جس کا نام خرم زکی ہے اور اس کے علاوہ کوئی اور فرد وھاں نہیں ہے ، اس فورم می کوئی تنظیم کے طور پر نہیں ہے سب انفرادی حثیت میں ہیں اور یہ کوئی این جی اوز کا نیٹ ورک نہیں ہے
    ہاں میرے بہت سارے دوست وہاں پر ہیں جن سے میرے نظریاتی تعلقات ہیں اور زاتی دوستیاں بھی یہ انفارمیشن کہ کیسے بینا سرور اینڈ کمپنی کے کراچی سٹیزن فورم پر قبضے کو ناکام بنایا گیا انھی سے مجھے ملی ہے ، اور ان لوگوں کا دور پار سے بھی ایل یو بی پاک بلاگ سے تعلق نہیں ہے
    میں این جی اوز کے بارے میں بہت واضح رائے رکھتا ہوں اور ان کو میں ہمیشہ سے بائیں بازو کی تحریک کو برباد کرنے اور پاکستان میں سماجی طبقات کی مزاحمت کو تباہ و برباد کرنے کا آلہ خیال کرتا رہا ہوں ، میں پاکستان کے نام نہاد لبرلز کو امریکی سامراجیت کے بازو کے علاوہ کچھ خیال نہیں کرتا ، یہ پروجیکٹ بیسڈ سیاسی طور پر امپوٹنٹ لوگ ہیں
    Shakeel Haider
    میں جن لوگوں سے کاز اور اشتراک میں ہم آھنگی خیال کرتا ہوں اور ان کے موقف کو درست خیال کرتا ہوں تو ان کی حمائت میں کسی ملامت کرنے والی کی ملامت کی پرواہ نہیں کرتا
    آپ نے سلمان حیدر ، بینا سرور ، نجم سیٹھی گروپ اور اس طرح کے دوسرے لوگوں کی بات کو درست خیال کیا ہے تو کریں ، میں آپ کے اختلاف کے حق کو چیلنج نہیں کرتا لیکن کم از کم یہ مت کریں کہ سامنے جب ایک بار آپ کو کہا ہے کہ میں ایل یو بی پاک کا حصہ نہیں ہوں تو بار بار اس حوالے سے طنزیہ رویہ اختیار کرنا مجھے یہ خیال کرنے پر مجبور کرتا ہے کہ آپ کی باتوں کا جواب ہی نہ دیا جائے
    میں اردو سپیکنگ ہوں ، آباواجداد کا تعلق دور دور سے بھی سرائیکستان سے نہیں لیکن ہمیشہ اس خطے کی آواز بنا ہوں کبھی یہ نہیں سوچا کہ اس کاز کے ٹھیکےدار اس کا اعتراف کرتے ہیں یا نہیں تو کیا اس کا مطلب ہے کہ میں سرائیکی قوم پرست ہوگیا
    نہیں میں نے کبھی قوم پرستی کو سیکنڈ نہیں کیا قومی سوال کو ضرور سیکنڈ کیا ہے اور اسے طبقاتی سوال سے ہمیشہ جوڑا ہے
    میرا لبرل لابی سے سب سے بڑا اختلاف یہ ہے کہ ایک تو وہ دیوبندی -سلفی عسکریت پسندی کو پاکستان میں صرف پاکستانی یا زیادہ سے زیادہ سعودی پراکسی کے طور پر دیکھتی ہے وہ اس کو سامراجی سرمایہ داری کے ساتھ لنک کرکے کبھی نہیں دیکھتی اور پھر سلفی -دیوبندی تکفیری فاشزم بطور آئیڈیالوجی کے کہاں موجود ہے وہ اس پر اکثر
    Obfuscative
    روش اختیار کرتی ہے اور جن بدمعاشوں کا سلمان حیدر ، ریحان مظہر یا ان جیسے اور لوگ دفاع کرنے نکلے ہیں وہ تو اپنے اخبار ، ٹی وی چینل اور مضامین و پروگرامز میں دیوبندی تکفیری دہشت گردوں کو پروجیکشن دیتے ہیں اور ان کو مین سٹریم میڈیا میں امن کا پیامبر بناکر دکھاتے ہیں نجم سیٹھی کے فرائیڈے ٹائمز میں محمد احمد لدھیانوی ، فاروقی ، ملک اسحاق کو پروجیکشن ملی ، اشرفی ایک معتدل ، امن پسند مولوی کے طور پر پہلے فرائیڈے ٹائمز میں پروجیکٹ ہوا اور پھر مین سٹریم تک پہنچا
    مفتی نعیم آف جامعہ بنوریہ سب سے زیادہ جنگ ، جیو پر ٹائم لیتا رہا اور یہاں پر ہی لدھیانوی کو پروجیکٹ کیا گیا اور اورنگ زیب فاروقی بھی زیادہ تر یہیں آیا
    یہ لبرلز کب دیوبندی تکفیری دہشت گردوں ، شیعہ کی کھلی تکفیر کرنے والوں اور تصوف پر مبنی صلح کل کی بات کرنے والوں کے خلاف شرک و بدعت کے فتوے جاری کرنے والوں کو ٹی وی چینلز پر براجمان کرنے کے عمل کے خلاف بولے ؟ کون سی تحریک انھوں نے چلائی ، کتنے ٹوئٹ ، کتنے فیس بک سٹیٹس اپ ڈیٹ کئے اور کتنے بلاگ انھوں نے لکھے
    ایل یو بی پاک کا ایک کیٹیگری ہے
    Media discourse on Deobandi Takfiri discourse
    اس کیٹیگری میں موجود آرٹیکلز جاکر دیکھیں ، میری درجنوں پوسٹیں اس موضوع پر بطور گیسٹ پوسٹ ملیں گی اور خود میری وال اور نوٹس گواہ ہیں کہ ہم نے میڈیا کے شیعہ نسل کشی ، صوفی سنی نسل کشی کو ٹارگٹ کلنگ کہہ کر اور مرنے والوں کی مسلکی شناخت کو سنسر کرنے اور مارنے والوں کی آئیڈیالوجیکل لیننگ کو چھپانے پر کسقدر تنقید کی اور کتنا وقت لگا کہ جب ڈان ، نیوز ، نیشن ، ڈیلی ٹائمز نے مرنے والوں کی شیعہ ، صوفی سنی شناخت لکھنا شروع کی اور اے ایس ڈبلیو جے اور دیگر تنظیموں کی دیوبندی شناخت کا بھی تذکرہ شروع کیا
    یہ کوئی فوبیا یا obsession نہیں ہے بلکہ یہ ایک ایسی حقیقت کو بار بار باور کرانا ہے جسے ہمارا مین سٹریم میڈیا اور سوشل میڈیا کے اندر بڑے طاقتور مافیاز لوگوں کے زھنوں سے نکالنے کے لئے ہمہ وقت کام کرتے ہیں
    یہ اتنا ہی اہم کام ہے جتنا اہم کام عامی سرمایہ داری سامراج کی جنگوں اور اس کے پہلو بہ پہلو ابھرنے والی مذھبی جنونیت اور داعش جیسی عفریت کے درمیان تعلق کی نوعیت کو بار بار بے نقاب کرنے کی ضرورت ہے
    ایل یو بی پاک کا موقف ایک اصولی اور دیانت داری پر مبنی موقف ہے اور اس کی حمائت کا مطلب یہ نہیں ہے کہ ہم اس بلاگ کی ایڈمن کا حصہ ہیں جیسے شکیل حیدر ، سلمان حیدر یا ایک دو دوست اور ہیں جن کی وکالت برائے بینا سرور و نجم سیٹھی و المانہ فصیح اور مخالفت ایل یو بی پاک کا مطلب نجم سیٹھی ، بینا سرور کے پے رول پر ہونا نہیں ہے

  • Lubp Archives
    June 13 at 2:34pm · Edited ·
    Don’t look at those Shias, Sunnis and rights activists who are criticizing Ilmana Fasih Deobandi on her abuses against Hazrat Ali and Hazrat Fatima.
    Look at those Shias, Sunnis and rights activists who are silent and/or are defending silence. The “neutrals”. They are more interesting. And at least as disgusting as Ilmana and her promoter Beena.
    “Kufa is not a city but the name of a silent nation. Whenever there is oppression and the nation remains silent, it becomes Kufa.” – Imam Ali Zain ul-Abideen