Featured Original Articles Urdu Articles

شیعہ اسماعیلیوں کے قتل عام کی ذمہ داری مفتی نعیم دیوبندی پر عاید ہوتی ہے – خرم زکی

 

279126_35608864

جس خدشہ کا اظہار گرشتہ کچھ ہفتوں سے کرتا چلا آ رہا تھا ( اور جس کو بعض عقلمند کسی سیاسی جماعت کی حمایت سے تعبیر کر رہے تھے) بالآخر سچ ثابت ہو ہی گیا۔ شیعہ امامی اسماعیلی مسلمانوں کے خون سے کل جس طرح کراچی میں ہولی کھیلی گئی اس کی ذمہ داری کالعدم دہشتگرد گروہ اہل سنت والجماعت (کالعدم لشکر جھنگوی) کے ساتھ ساتھ براہ راست رینجرز حکام پر بھی عائد ہوتی ہے۔ رینجرز اس شہر میں دہشتگردوں کے خلاف کاروائی کے لیئے طلب کی گئی لیکن رینجرز حکام نے بجائے کالعدم دہشتگرد گروہوں اہل سنت الجماعت، لشکر جھنگوی اور ان دہشتگرد گروہوں کے سرپرستوں بشمول مفتی نعیم ( جس کا شیعہ امامی اسماعیلی مسلمانوں کے خلاف فتوی اور مسلکی نفرت پر مبنی کتاب ریکارڈ پر ہے) کے خلاف ایکشن لینے کے شہر میں سیاسی کھیل کھیلنا شروع کر دیا اور گویا ان کالعدم دہشتگرد گروہوں کو پاکستانیوں کے خون سے ہولی کھیلنے کی کھلی چھٹی دے دی گئی۔

رینجرز سیاسی کھیل کے بجائے کالعدم دہشتگرد گروہوں کے خلاف کاروائی پر توجہ دے۔ کوئی بتانا پسند کرے گا کہ رینجرز لدھیانوی، فاروقی، مینگل برادران کے خلاف ایکشن لیتے ہوئے کیوں ڈرتی ہے ؟ ان دہشتگردوں کے سرغنوں کے خلاف کاروائی تو دور کی بات ہے ڈی جی رینجرز کی اتنی ہمت بھی نہیں کہ شاہراہ فیصل پر موجود اس کالعدم دہشتگرد گروہ کا جھنڈا ہی اتروا سکیں۔ پنجاب میں یہ دہشتگرد گروہ کھلے عام کر رہا ہے اور وہاں ہی سے کراچی میں دہشتگردی کی کاروائیاں پلان کی جا رہی ہیں لیکن سعودی بادشاہوں کی ٹٹو نواز حکومت سعودی غلامی سے مجبور ان دہشتگرد گروہوں کو دودھ پلانے میں مصروف ہے، یہ دہشتگرد گروہ کھلے عام شہر کراچی میں ریلیاں نکال رہے ہیں،

مفتی نعیم جیسا تکفیری دہشتگرد ان ریلیوں کی قیادت کر رہا ہے لیکن رینجرز کی ہمت نہیں کہ ان دہشتگرد گروہوں پر ہاتھ ڈال سکے اور پھر بات کی جاتی ہے قانون کی عملداری کی ؟ عوام کو بیوقوف بنانا بند کریں اور ان دہشتگرد گروہوں کے خلاف کاروائی کا آغاز کریں اور اگر رینجرز میں اس کام کی سکت نہیں تو رینجرز کو واپس بارڈر پر بھیجا جائے اور آرمی طلب کر کے ان کالعدم دہشتگرد گروہوں کے خلاف اور ان کے سرپرست مولویوں اور مدارس کے خلاف کاروائی کا آغاز کیا جائے۔ شہید ہونے والے اسماعیلی مرد، عورت اور بچے اس ملک کے شہری تھے کوئی بھیڑ بکری نہیں جو نواز حکومت نے اپنے یہ کتے پاکستانی عوام پر چھوڑ رکھے ہیں۔

About the author

Shahram Ali

10 Comments

Click here to post a comment