Featured Original Articles Urdu Articles

صفورہ گوٹھ پر اسماعیلی شیعوں کی بس پر حملہ اور انڈین ایجنسی را کا ہاتھ – زالان

dd

تیرہ مئی – کراچی کے صفورہ گوٹھ پر اسماعیلی شیعوں کی بس پر دیوبندی مدارس مافیا کی تنظیم سپاہ صحابہ نے فائرنگ کر کے پینتالیس لوگوں کو ہلاک کر دیا

سعودی عرب سے وہابی امام کعبہ کے پاکستان آنے کے بعد دیوبند مدارس کو دیا جانے والا مزید پیسہ اب شیعوں کے قتل عام میں استعمال ہو رہا ہے

صفورہ گوٹھ کے آس پاس دیوبند مدارس کا بہت مضبوط نیٹ ورک ہے، ائیرپورٹ پر طالبان کے حملہ بھی یہیں سے ہوا تھا

شیعوں کی بس پر فائرنگ پینتالیس افراد کو ہلاک کر دیا گیا، کیا آرمی کی طرف سے ایسا ہی رد عمل آ ے گا جیسا پشاور حملے پر آیا تھا ؟

طالبان ،القاعدہ ،لشکر جھنگوی،اہل سنت ولجماعت اور دیوبند مدارس ایک ہی ہیں ،ان سے ایک جیسا ہی نمٹ کر دہشتگردی ختم ہو سکتی ہے

جماعت اسلامی اپنے کمینے پن کا مظاہرہ کرتے ہوے یہ پروپیگنڈا کر رہی ہے کہ یہ امریکہ، انڈیا اور ایم کیو ایم نے کروایا ہوگا

کئی دہشگردوں کا تعلق براہ راست دیوبندی مدارس سے نکلتا ہے مگر حکومت کی ہمت نہیں کہ مدارس کے خلاف کروائی کریں

صفورہ گوٹھ سے قریب جامعہ اشرافیہ میں جمعہ کی نماز کے بعد طالبان اخبار بیچتے ہوے – ویڈیو – کہاں ہے رینجرز اور فوج؟

https://www.facebook.com/zalaan2/posts/922853341106279

کسی نے یہ ویڈیو بھیجی ہے ،جمعہ کی نماز کے بعد دیوبند مدرسے کراچی میں طالبان کا اخبار بک رہا ہے

ملک میں اس وقت بھی سب سے بڑا خطرہ طالبان اور دیوبندی دہشتگردی ہے ،مدارس کے خلاف کروائی نا کرنا انہیں مظبوط کرنا ہے

شیعوں پر حملوں میں دیوبندی تنظیمیں ملوث رہیں مگر جماعت اسلامی نے کبھی انکی مذمت نہیں کی ،ہر دہشتگردی پر یہ کنفیوز کرتے رہیں گے

اگر را یا امریکہ فرقہ وارانہ جنگ کرواتا تو ذرا جا کر دیوبند مدارس میں دیکھو جہاں آپ کو طالبان اور فرقہ وارانہ تنظیموں کے حمایتی ملتے ہیں

شیعہ افراد کی روزانہ پورے ملک میں ٹارگٹ کلنگ کی جا رہی ہے اور اس پر سارا میڈیا اور حکومت خاموش رہتی ہے

جہالت کی فیکٹری دیوبند مدارس سے اس واقعے پر کوئی خاص مذمت نہیں ہوگی کیونکہ یہ انہی کی تنظیموں نے کروہا ہے

طالبان اور دیوبندی تنظیموں کو فوج نے یہ سبق دیا کہ جو دہشتگردی کرنا ہے کرو اگر فوج پر کرو گے تب ہی کروائی ہوگی

کراچی میں آٹھ دس بڑے مدرسے ایسے ہی جو باقاعدہ طالبان ،القاعدہ اور سپاہ صحابہ کا مرکزی دفتر بھی ہیں ،ریاست کچھ بگاڑ نہیں سکتی انکا

فوج اور حکومت مدارس کے حلاف کروائی نا کر کے پاکستان میں طالبان اور داعش کو مظبوط کر رہی ہے

جامعہ رشیدیہ کراچی جا کر دیکھ لو ، وہاں ہر کوئی القاعدہ ،طالبان اور داعش کا حامی ملے گا ،انکے کمپاؤنڈ کے اندر انکی اپنی ریاست ہے

صفورہ گوٹھ اور ایئر پورٹ کے بیچ میں کنٹونمنٹ کے رہائشی پلاٹس پر طالبان دیوبند مدرسہ جامعہ اشرفیہ ہے

جائے وقوع سے کچھ پمفلٹ بھی ملے ہیں جن میں کہا گیا ہے کہ دولتِ اسلامیہ کا آغاز ہو چکا ہے اور’رافضی‘ یعنی شیعہ سنگین نتائج کا انتظار کریں -بی بی سی

ایک بار پھر شیعوں کے قتل عام کو را اور امریکی سازش بنا کر اپنے طالبان دیوبندی بھائیوں کو بچایا جا رہا ہے

ساری دنیا میں دیوبندی وہابی دہشتگردی کر رہے ہیں ، پاکستان میں بھی یہی ہو رہا ہے

دیوبندیوں نے ہی دہشتگردی کی اور میڈیا پر انہی ہے نمائندوں کو تبصرہ کرنے کے لئے بلایا جاتا ہے

مفتی نعیم کو جہالت کی فیکٹری کہنے پر زیادہ اعتراض ہے بہ نسبت دہشتگردی کی فیکٹری کہنے کے

جماعت اسلامی کی پروپگنڈا فیکٹری اس دہشتگردی کا رخ طالبان کی مذمت سے ہٹا کر کہیں اور لگانے میں مضروف ہے

طالبان کے ہمدردوں کے نزدیک آج کی دہشتگردی میں را، امریکہ ،بلوچ، ایم کیو ایم ہو سکتے ہیں مگر طالبان نہیں ،کیونکہ یہ انکے بھائی جو ہیں

پھر تو ملک کے دیوبند مدارس میں پلنے والے ہزاروں طالب علم بھی را کے ایجینٹ ہوے، کیونکہ وہ سب بھی تو جند الله ،القاعدہ اور طالبان کے حامی ہیں

تو پھر طالبان ،القاعدہ کے حامی دیوبند مدارس بند کیوں نہیں کر دیتے ، سعودی امام کعبہ جو انکا دورہ کرتا ہے را کا ایجنٹ ہے؟

پشاور واقعے کے بعد بھی یہی لوگ کہتے رہے کہ یہ طالبان نہیں ہو سکتے جو آج کی دہشتگردی پر بھی یہی کہہ رہے ہیں

دیوبندی دہشتگرد گروپ جند الله نے بس پر فائرنگ کی ذمہ داری قبول کر لی ،مگر پاکستانی اسے ڈرامہ ہی کہتے رہیں گے

عمران خان نے ایک بار پھر ذلالت کا مظاہرہ کرتے ہوے طالبان کی مذمت نہیں کی اور سندھ حکومت کو ذمہ دار ٹہرایا،اگر خیبر پختونخواہ میں ہوتا تو وفاق کو ٹھہراتا

ہر طالبان دہشتگردی پر انصافی جماعتیوں کے ساتھ مل کر طالبان کو بچاتے ہیں ، طالبان کے کاندھوں پر چڑھ کر اقتدار حاصل کرنا چاہتے ہیں

اس سانحے پر بھی عمران خان نے طالبان کی مذمت نہیں کہ بلکہ سندھ پولیس اور حکومت پر تنقید کی

اگر یہ واقعہ خیبر پختونخواہ میں ہوتا تو عمران وفاق اور فوج کو ذمہ دار ٹھہراتا ،سندھ میں ہوا ہے تو اس پر سیاسی پائنٹ سکورنگ کر رہا ہے

جمعہ کی نماز کے بعد جہادی طالبان کا اخبار بیچ رہے ہوتے ہیں،ان پر کبھی رینجرز کی نظر نہیں پڑتی ہے

ساری دنیا میں وہابی دیوبندی دہشتگردی کی وجہ انکی مذہبی تعلیمات ہیں ،اس میں نا امریکہ کا ہاتھ ہے نا انڈیا کا ،یہ مذہبی سوچ کی پیداوار ہے

سوات میں بھی جب طالبان کا قبضہ ہوا تو اسے را کی کروائی کہا ،پھر طالبان کا نظام عدل کیوں منظور ہوا ؟ صوفی محمد را کا ایجنٹ تھا؟

آرمی چیف کا دورہ سرلنکا کینسل کرنا اور کراچی پہنچنا اس بات کا ثبوت ہے کہ فوج اسے اب اپنی جنگ سمجھ رہی ہے اور حکومت عوام اور فوج ایک ہے

بیت الله محسود ،اسامہ ،حکیم الله اور ابو بکر بغدادی کتے کی موت مارے گئے ، سارے خلیفاؤں کے یہی حشر ہوتا ہے

اسماعیلی بے ضرر ہے یا پر امن انہیں نشانہ بنانے والے یہ نہیں دیکھتے ہیں ،انکے نزدیک ہر مذہبی اختلاف رکھنے والا واجب القتل ہوتا ہے

ٹارگٹ ہونے والی کمیونٹی چیختی ہے ہمیں ایم کیو ایم نہیں، سپاہ صحابہ مار رہی ہے. الباکستانی شور کرتے ہیں نہیں بھائی ایم کیو ایم مار رہی ہے.

میرے محلے کی مسجد میں جمعے کی نماز کے بعد جہادی طالبان کا اخبار بیچ رہا ہوتا ہے ، کون سی انٹلیجنس چاہیے انھے پکڑنے کے لئے ؟

دیوبند مدارس کو بند کے بغیر دہشتگردی ختم کرنا نا ممکن ہے

دنیا میں دیوبندی وہابی فرقہ ننانوے فیصد مذہبی دہشتگردی میں ملوث ہے

جہاں جہاں دیوبندیت اور وہابیت مضوط ہے وہاں یہ خون خرابہ ہو رہا ہے ،امریکہ برطانیہ خود اس دہشتگردی کی زد میں ہیں یہ امریکی یا انڈین سازش نہیں یہ خود رو مذہبی پودا ہے جو اپنی جڑیں مضبوط کر چکا ہے

دنیا میں کوئی ایسا ملک نہیں جو وہابی دہشتگردی کا شکار نا ہو مگر پھر بھی ہم اسے مغربی سازش سمجھ کر آنکھیں بند کر لیتے ہیں

انڈیا ،امریکہ ،برطانیہ ،چین اور روس جیسے ممالک بھی اس وہابی دشتگردی کا شکار بنے ہیں ، یہ امریکی چال نہیں مذہبی جال ہے

امریکہ اور انڈیا کو الزام دینے سے فائدہ یہ ہوتا ہے کہ لوگوں کی توجہ ہٹ جاتی ہے اور سیکورٹی اداروں پر سوال نہیں اٹھتا

یہ ریٹائرجہادی فوجی ٹی وی پر امریکہ کے خلاف جو بھونک رہے ہوتے ہیں وہ اپنی فوج کو امریکی امداد اور اسلحہ لینے سے کیوں نہیں روکتے؟

اگر حمید گل جیسے مذہبی انتہا پسند اور طالبان کمانڈر فوجی چھاونیوں میں رہتے ہوں تو طالبان کے خلاف جنگ کیسے ممکن ہے

جی جی طالبان را کے ایجینٹ ہیں اسی لئے وہ کبھی دیوبند مدرسے ،جماعت اسلامی اور تبلیغی جماعت پر خودکش حملہ نہیں کرتے ہیں

را کےایجنٹ سے دیوبند مدارس،تبلیغی جماعت،جماعت اسلامی ،جماعت اہل حدیث مکمل محفوظ ہیں، جبکہ دوسرے کیوں فرقے نہیں ؟

جہادی سعودی عرب اور پاکستانیوں نے بناے تھے ،یہ مذہبی تعلیمات تھیں ،امریکہ نے صرف پیسا دیا تھا روس کو ہرانے کے لئے

پاکستانیو یہ بتاؤ داتا دربار ، عبد الله شاہ غازی کے مزار پر خودکش دھماکے کروانا را کی سازش تھی یا مذہبی سوچ ؟

سنی بریلوی دعوت اسلامی کا سالانہ اجتماع صرف دیوبندی دہشتگردی کے خوف سے نہیں ہوتا ہے

کراچی میں طالبان کی جتنی پکڑ دھکڑ یا مقابلے ہوے ہیں وہ پولیس نے کئے ہیں ، رینجرز صرف سیاسی کام کرتی ہے

اگر طالبان را یا امریکہ کے ایجنٹ ہیں تو یہ جماعت اسلامی ،تبلیغی جماعت اور دیوبند مساجد پر حملے کیوں نہیں کرتے ؟

اسٹبلشمنٹ نے سندھ اور بلوچستان میں ایم کیو ایم اور قوم پرستوں کے مقابلے میں جہادی جماعتوں کو سپورٹ کیا

کراچی میں جہادی نیٹ ورک کو با آسانی دیکھا جا سکتا ہے ، کل جمعہ کی نماز کسی بڑی دیوبند مسجد میں پڑھ لیں ، اس کے باھر جہادی کھڑے مل جائینگے

طالبان “را ” کے ایجنٹ؟ تو پھر علماء دیوبند،عمران خان ، فوجی ،اینکرز اور جماعتی انہیں اپنا بھائی اور انسے مزاکرات کی بات کیوں کرتے تھے؟

جہادی نیٹورک ختم کرنا ہے؟کل جمعہ کی نماز کے باہر جہادی طالبان القلم اور اسلام اخبار بیچ رہے ہونگے،وہ تو کہتے ہیں جو اکھاڑنا ہے اکھاڑ لو

را کے ایجنٹوں سے مذاکرات کا قانون بھی بنا لیں پھر ، اور را کے ایجنٹوں کی حمایت کرنا غداری ہوگی یا وفا داری ؟

کراچی میں دیوبند مدارس اور جہادی سرگرمیوں کو سب سے زیادہ آزادی کینٹونمنٹ ایریا میں دی گئی

کراچی میں قائم دہشتگرد دیوبند مدارس میں پڑھنے والوں کا تعلق خیبر پختون خواہ سے سے، انہیں بند کر کے خیبر پختونخواہ ہی میں کھولا جائے

deobandi

Videos

Massacre of 45 Ismaili Shia Muslims in Karachi at the hands of Deobandis ASWJ terrorists on 13 May 2015. Only a few days before this massacre, Deobandi Mufti Naeem issued a hateful fatwa against Quaid Azam Muhammad Ali Jinnah and Shia Muslims in general including Aga Khani, Bohris and Isna Asharis. After this fatwa, ASWJ terrorists led by Aurangzaib Farooqi killed innocent Ismaili civilians in Karachi.

Posted by Let Us Build Pakistan on Wednesday, May 13, 2015

کراچی میں اسماعیلی شیعہ مسلمانوں کے قتل عام پر پاکستانی تجزیہ نگاروں کا رد عمل کیاہمیں نہیں پتہ کہ اسماعیلی کمیونٹی کے خلا ف کس کے فتویٰ ہیں آپ گوگل کر کے دیکھ لیں اور کیا حکومت اس پوزیشن میں ہےکہ وہ ان مدرسوں کے بارے میں کچھ کر سکے جب تک یہ پرائیوٹ مدارس اور تنظیمیں تھانیدار سے تکڑی ہیں کچھ نہیں ہو سکتا – فواد چودھری سب سے بڑ ے مدرسے جن پر دہشت گردی کے الزامات لگتے ہیں وہ کس کے ہیں (دیوبندی مسلک کےہیں)مولانا فضل الرحمن کے ،ملا عمراور مولوی سمییع الحق کونسے مدرسے سے پڑھ کے گئےبیت اللہ مسعود کس کے پاؤں دباتے تھے – روف کلاسرا پاکستان آج پہلی دفعہ دنیا میں رجسٹر ہوا ہے کہ یہاں بھی داعش موجود ہے حالانکہ جند اللہ اور دوسری تکفیری دیوبندی دہشت گردجماعتیں پہلے ہی ان کو سپورٹ کرتیں ہیں – ارشد شریف

Posted by Let Us Build Pakistan on Thursday, May 14, 2015

db

11

13

122

1b

as1

as2

as3

14

About the author

SK

16 Comments

Click here to post a comment
  • Khurram Zaki said

    اگر حکومت سندھ، پولیس اور رینجرز شیعہ امامی اسماعیلی کے خلاف نفرت انگیز کتاب لکھنے، ان کو کافر مرتد قرار دینے اور نفرت انگیز لٹریچر چھاپنے اور اس پر تقریظ لکھ کر اس نفرت انگیز کتاب لکھنے والے تکفیری دہشتگرد مولوی محمد نعیم ولد نا معلوم (مہتمم جامعہ بنوریہ) کی حوصلہ افزائی کرنے پر مفتی محمد نعیم ولد نا معلوم اور مفتی تقی عثمانی ولد شفیع عثمانی (دارالعلوم کورنگی) کے خلاف از خود کاروائی کر کے ان دہشتگرد مولویوں کے خلاف انسداد دہشتگردی ایکٹ کے تحت مقدمہ درج نہیں کرتی تو میں خود بشمول سول سوسائٹی کے دیگر دوستوں کے ہمراہ (یا اکیلے) خود ان دونوں دہشتگرد مولوں کے خلاف ایف آئی آر کے اندراج کے لیئے پولیس سے رجوع کروں گا۔

    کتاب کا نام: ادیان باطلہ اور صراط مستقیم
    ناشر: بیت الاشاعت کراچی
    مصنف کا نام: مفتی محمد نعیم
    تقریظ: مفتی محمد تقی عثمانی

  • When u ppp walas are.so sure, y ur ministera specially cuptaan is not taking action against these deobandies? Provide them all assistance so that they can perform instead of whinning on the net.

    Secondly, from ur starting lines, i am getting message that u want equal attacks on deobandi mosques and madaris to confirm if that was really CIa etc. What a shameless insane thought!

  • Pakistan Salafi Party – PSP
    کراچی میں اسماعیلی شیعہ کا قتل عام قابل مذمت ہے

    پاکستان میں رہنے والے تمام اہلحدیث اور سلفی مسلمان کراچی میں اسماعیلی یا آغا خانی شیعہ مسلمانوں پر کالعدم دیوبندی دہشت گرد تنظیم سپاہ صحابہ کے تکفیری خوارج کے حملے کی شدید مذمت کرتے ہیں، مسلک اور فرقہ کے اختلاف کے باوجود ہم پر امن بقائے باہمی کے قائل ہیں، بانی پاکستان حضرت قائد اعظم محمد علی جناح کے بہت سے رشتہ دار بھی اسماعیلی مسلک سے تعلق رکھتے ہیں، مسلم لیگ کے بانی اور پہلے صدر سر آغا خان بھی اسی مسلک کے تھے

    پاکستان امت مسلمہ کا قلعہ ہے اور آج کل اس قلعے کے اندرونی و بیرونی دشمن سنی شیعہ کی تفریق کر کے اسے کمزور کرنا چاہتے ہیں، وطن عزیز میں دیوبندی مسلک سے تعلق رکھنے والے تکفیری خوارج طالبان، لشکر جھنگوی، سپاہ صحابہ اور اب داعش کے عنوان سے شیعہ فرقے کے افراد پر حملے کر رہے ہیں، یہی تکفیری دیوبندی خارجی گروہ کراچی اور خیبر پختونخواہ میں سلفی اور اہلحدیث یا وہابی مسلک کی متعدد مساجد پر حملے کر چکا ہے جبکہ سنی صوفی یا بریلوی مزاروں پر بھی انہی خوارج نے حملے کیے ہیں

    ہم پاکستان اور اسلام کے خلاف تکفیری دیوبندی خوارج کی یلغار کی شدید مذمت کرتے ہیں، سنی، شیعہ، اہلحدیث، بریلوی، وہابی، الغرض سب کو اس فتنے کے خلاف متحد ہو جانا چاہیے

    https://www.facebook.com/PakistanSalafiParty/photos/a.220632724800942.1073741828.220629191467962/379083218955891/?type=1

  • An Ismaili Shia’s reaction to the Safoora Chowrangi massacre in Karachi – by Johnny Muaviya
    —————————-
    I was talking to an Ismaili friend today, poor soul was very sad. But he was also surprised. He couldn’t understand why Ismailis had been targeted by the Deobandi ASWJ militants in Karachi, and thought may be there was some conspiracy. According to him, Ismailis don’t abuse Sahabas, they are not Iranian agents, they don’t do Matam or Azadari, they don’t block roads or take out Muharram or Meelad processions, and they don’t organise Tabarrah majalis against the Sahabas Yazid and Muaviya. He said that Ismailis don’t even condemn the killings of Twelver or Isna Ashari Shias, and make sure to distance themselves from mainstream Shias as much as they can, and they thought all this would save their lives.
    According to my Ismaili friend, Twlever Shias were to blame themselves for their condition, but why have the poor Ismaili Shias been attacked? What have they done? They didn’t even stand with Shias when through their genocide, and didn’t even condemn it, even Prince Karim Aga Khan wouldn’t condemn it, then why have the Ismailis been attacked?
    Johnny Muaviya is glad that people have still not understood the Muaviya ideology of hate and terror! As long as we have appeasers, apologists and Uncle Toms among Shias, we will continue to kill them all and rule them!

    • Well tell this freind of yours that there is not just one single type of Ismaili as even the Bohra Sect are a Branch of the Ismaili tree. Besides Also not all Companions are good and not all are bad, so there fore they are also among them people capable of rebellion and transgression it even happened with previous prophets like Jesus was Betrayed by one of his own companions. Well if he blames Shia for being responsible for their own condition then on the same note I can blame the Sambhoguddin (Ismailis) for their own condition as they follow a Person who is of Unknown Parentage and always is called as a Play boy and does not follow Islamic teachings and Values and also is an Alcoholic. He has got Divorce cases worth Millions pending in European courts. A Nephew of his was a Gay Porn star and also a Drug Addict who died of overdose and his last rites were performed in a Chapel and not in in Islamic manner, so how come they are Muslims? As Following of Illegitimate persons in Matter of Religion is Forbidden as they can not even Lead Prayer.

      Also if any one calls Shia as Iranian Agents I can then in the same Vein call all Sunnis as being Saudi Agents or Turkish or Egyptian Agents and so on. No big deal.

      • Also I have written this short passage regarding Misplaced aggression in Pakistani Society do see this

        An aspect of a society’s level of Social Maturity is the extent to which it engages in misplaced aggression against others, because of some external factor, which is beyond the control of those whom it is subjecting to the misplaced aggression.

        If we take a look at Pakistani society in this regard we can understand a bit more clearly the message I am trying to convey. Just because if Pakistan may not get along with a certain country then automatically the entire community of the Majority religion or sect or ethnicity of that country becomes the Enemy. We see it in case of communities like Shia, Christian or Hindu in Pakistan. Where just because Pakistan may not get along with Iran or India or the West the society vents its aggression on these groups and bullies them and usurps their rights and dignity, even with state sanctioning and patronage.

        There is a level of similarity as well as difference b/w the Pakistan of Today and Nazi Germany. Because the similarity is the proliferation of Hate ideologies and literature as well as deamonization and dehumanisation of the other be it Shia, Ahmadi, Hindu Christian etc. And the difference is at least Nazi Germany was an economically sound super power in its own right and also an Industrial Giant, which we are nowhere close to achieving given our current state of affairs.
        We must also remember one thing namely that no genocide directly begins with any Gas chambers or torture cells or forced marches and concentration camps or any other such diabolical measures and facilities, rather it is only on the basis of Dehumanization and deamonization of the other and their exclusion which paves the way.

        I would like to quote here regarding Auschwitz

        The road to Auschwitz was built by hate, but paved with indifference.
        – Ian Kershaw

  • Khurram Zaki said

    جس خدشہ کا اظہار گرشتہ کچھ ہفتوں سے کرتا چلا آ رہا تھا ( اور جس کو بعض عقلمند کسی سیاسی جماعت کی حمایت سے تعبیر کر رہے تھے) بالآخر سچ ثابت ہو ہی گیا۔ شیعہ امامی اسماعیلی مسلمانوں کے خون سے کل جس طرح کراچی میں ہولی کھیلی گئی اس کی ذمہ داری کالعدم دہشتگرد گروہ اہل سنت والجماعت (کالعدم لشکر جھنگوی) کے ساتھ ساتھ براہ راست رینجرز حکام پر بھی عائد ہوتی ہے۔ رینجرز اس شہر میں دہشتگردوں کے خلاف کاروائی کے لیئے طلب کی گئی لیکن رینجرز حکام نے بجائے کالعدم دہشتگرد گروہوں اہل سنت الجماعت، لشکر جھنگوی اور ان دہشتگرد گروہوں کے سرپرستوں بشمول مفتی نعیم ( جس کا شیعہ امامی اسماعیلی مسلمانوں کے خلاف فتوی اور مسلکی نفرت پر مبنی کتاب ریکارڈ پر ہے) کے خلاف ایکشن لینے کے شہر میں سیاسی کھیل کھیلنا شروع کر دیا اور گویا ان کالعدم دہشتگرد گروہوں کو پاکستانیوں کے خون سے ہولی کھیلنے کی کھلی چھٹی دے دی گئی۔ رینجرز سیاسی کھیل کے بجائے کالعدم دہشتگرد گروہوں کے خلاف کاروائی پر توجہ دے۔ کوئی بتانا پسند کرے گا کہ رینجرز لدھیانوی، فاروقی، مینگل برادران کے خلاف ایکشن لیتے ہوئے کیوں ڈرتی ہے ؟ ان دہشتگردوں کے سرغنوں کے خلاف کاروائی تو دور کی بات ہے ڈی جی رینجرز کی اتنی ہمت بھی نہیں کہ شاہراہ فیصل پر موجود اس کالعدم دہشتگرد گروہ کا جھنڈا ہی اتروا سکیں۔ پنجاب میں یہ دہشتگرد گروہ کھلے عام کر رہا ہے اور وہاں ہی سے کراچی میں دہشتگردی کی کاروائیاں پلان کی جا رہی ہیں لیکن سعودی بادشاہوں کی ٹٹو نواز حکومت سعودی غلامی سے مجبور ان دہشتگرد گروہوں کو دودھ پلانے میں مصروف ہے، یہ دہشتگرد گروہ کھلے عام شہر کراچی میں ریلیاں نکال رہے ہیں، مفتی نعیم جیسا تکفیری دہشتگرد ان ریلیوں کی قیادت کر رہا ہے لیکن رینجرز کی ہمت نہیں کہ ان دہشتگرد گروہوں پر ہاتھ ڈال سکے اور پھر بات کی جاتی ہے قانون کی عملداری کی ؟ عوام کو بیوقوف بنانا بند کریں اور ان دہشتگرد گروہوں کے خلاف کاروائی کا آغاز کریں اور اگر رینجرز میں اس کام کی سکت نہیں تو رینجرز کو واپس بارڈر پر بھیجا جائے اور آرمی طلب کر کے ان کالعدم دہشتگرد گروہوں کے خلاف اور ان کے سرپرست مولویوں اور مدارس کے خلاف کاروائی کا آغاز کیا جائے۔ شہید ہونے والے اسماعیلی مرد، عورت اور بچے اس ملک کے شہری تھے کوئی بھیڑ بکری نہیں جو نواز حکومت نے اپنے یہ کتے پاکستانی عوام پر چھوڑ رکھے ہیں۔

    کوئی بتائے گا کہ 1982 میں چترال میں شیعہ اسماعیلی کیونٹی کے خلاف ہونے والی دہشتگردی میں، جس میں 60 افراد کا قتل عام کیا گیا تھا، را ملوث تھی یا جنرل ضیا کے پالتو تکفیری دہشتگرد کتے ؟ جنرل ضیا کا کورٹ مارشل کب ہو رہا ہے ؟

    کیا دہشتگردوں کے سرغنہ سراج الحق دیوبندی اور جماعت اسلامی نے اسماعیلیوں پر ہونے والے حملے کے بعد بھی کالعدم دہشتگرد طالبان، انجمن سپاہ صحابہ، کی مذمت میں کوئی رسمی ہی صحیح بیان جاری کیا؟ نہیں ؟ تو پھر پتہ چل جاتا ہے کہ یہ ساری دہشتگردی اور قتال کس کے ایما پر ہو رہا ہے۔ کیا سراج الحق دیوبندی نے آرمی پبلک اسکول میں طالبان دہشتگردوں کے ہاتھوں معصوم بچوں کے قتل عام کے بعد بھی طالبان کی مذمت کی تھی ؟

    یہ شیعہ امامی اسماعیلی کے خلاف کفر و ارتداد کا فتوی را نے دیا ہے یا مفتی نعیم نے ؟ نام نہاد دانشوروں سے سوال۔

    کیا ڈی جی رینجرز میں شیعہ امامی اسماعیلی کے خلاف کفر و ارتداد کا فتوی دینے والے مفتی نعیم اور جامعہ بنوریہ کے خلاف کاروائی کی سکت ہے ؟

    جب تک پورے ملک میں جماعت اسلامی، کالعدم دہشتگرد اہل سنت والجماعت، لشکر جھنگوی، مفتی نعیم، جامعہ بنوریہ، بنوری ٹاؤن اور ان جیسے ہی دہشتگردی کے دیگر اڈوں کے خلاف بھرپور فوجی آپریشن نہیں ہوتا ملک میں جاری قتل عام کا یہ سلسلہ رکنے والا نہیں۔

    اگر حکومت سندھ، پولیس اور رینجرز شیعہ امامی اسماعیلی کے خلاف نفرت انگیز کتاب لکھنے، ان کو کافر مرتد قرار دینے اور نفرت انگیز لٹریچر چھاپنے اور اس پر تقریظ لکھ کر اس نفرت انگیز کتاب لکھنے والے تکفیری دہشتگرد مولوی محمد نعیم ولد نا معلوم (مہتمم جامعہ بنوریہ) کی حوصلہ افزائی کرنے پر مفتی محمد نعیم ولد نا معلوم اور مفتی تقی عثمانی ولد شفیع عثمانی (دارالعلوم کورنگی) کے خلاف از خود کاروائی کر کے ان دہشتگرد مولویوں کے خلاف انسداد دہشتگردی ایکٹ کے تحت مقدمہ درج نہیں کرتی تو میں خود بشمول سول سوسائٹی کے دیگر دوستوں کے ہمراہ (یا اکیلے) خود ان دونوں دہشتگرد مولوں کے خلاف ایف آئی آر کے اندراج کے لیئے پولیس سے رجوع کروں گا۔
    کتاب کا نام: ادیان باطلہ اور صراط مستقیم
    ناشر: بیت الاشاعت کراچی
    مصنف کا نام: مفتی محمد نعیم
    تقریظ: مفتی محمد تقی عثمانی

  • اسماعیلی کمیونٹی کو تازہ ترین دھمکیاں ملنا شروع ہوگئی ہیں
    کہ وہابی مذہب اختیار کریں یا پاکستان چھوڑدیں . –
    سعودیہ کی بادشاہت کو خطرہ ہے اس کے لئے سب کو سعودیہ کا ساتھہ دینا ہوگا
    پاکستان میں اس وقت لشکر جھنگوی اور جنداللہ کا اتحاد سب سے زیادہ طاقتور ہے

    http://www.christiantoday.com/…/pakistan.we.will.…/53871.htm