Original Articles Urdu Articles

زرداری لیگ کا تکفیری عناصر سے دوستانہ رویہ – عمار کاظمی

PPP-SL-10-01-2013

دوستوں کا خیال اور خوش فہمی کہ پیپلز پارٹی یعنی موجودہ زرداری لیگ کا تکفیری دوست رویہ دراصل بقائے باہمی کی سیاست ہے۔ بے شک بقائے باہمی کی سیاست پی پی کی اساس تھی۔ مگر اب نہیں۔ پیپلز پارٹی گزشتہ سات آٹھ سالوں میں ناکامیوں اور غلطیوں کی ہزار داستان لکھ چکی ہے۔ سلمان تاثیر کے قتل کے بعد پیپلز پارٹی کا رویہ کون بھول سکتا ہے؟

B7JxNzyW

عابدہ حسین، فیصل رضا عابدی، فخر امام، فردوس عاشق اعوان، ندیم افضل چن، اور اب، فہمیدہ مرزا اور زوالفقارمرزا، گیلانی اور حامد سعید کاظمی۔ ان سب کے کھڈے لائن لگنے کی وجہ اگر پیپلز پارٹی والوں سے پوچھو تو ہر کسی کے لیے ایک الگ کہانی بنا کر سنائی جاتی ہے۔ لیکن حقیقت یہ ہے کہ حقیقت ایک ہی ہے۔ ان میں سے کوئی بھی تکفیری آنکھ کا تارا ثابت نہیں ہوسکتا تھا۔ لہذا سب کھڈے لائن لگ چکے ہیں۔ باقی زرداری کا کاروبار محل دولت، شراکت داری اور سانجھے داری سب کچھ عربوں کے پاس اور عربوں کے ساتھ ہے۔ تو یہ بقائے باہمی سے زیادہ سرمائے کے تحفظ کی سیاست ہے۔

یہ بھی ویسے عجیب منافقت ہے کہ ڈاکٹر مبشر حسن سے لے کر جاوید جبار اور حتی کہ اعتزاز احسن تک جب بھی کسی نے قیادت سے اختلاف کیا تو سننے کو یہی ملا کہ وہ غدار تھا، وہ تو ٹرک پر چڑھ گیا تھا، وہ فلاں تھا اور وہ مخلص نہیں تھا۔ یعنی محض قیادت ہی ٹھیک ہو سکتی ہے اور وہی صحیفہ آسمانی ہے۔ اور جب اعتزاز واپس آ گیا تو پھر کوئی بات نہیں، کوئی اعتراض نہیں۔ اپنے ساتھ کھڑے تو انھیں جنرل ضیا کے ساتھی بھی قبول ہوتے ہیں۔

About the author

Shahram Ali

74 Comments

Click here to post a comment