Original Articles Urdu Articles

سنی اتحاد کونسل کے رہنما طارق محبوب کی شہادت

CC3BxYBUEAAhYc7

 

اگر سنی اتحاد کونسل کا طارق محبوب رینجرز کسٹدی میں مارا جائے جس پر کوئی ایک ایف آئی آر بھی دہشتگردی کی درج نہ ہو اور لدھیانوی، فاروقی، صوفی محمد، ملا عبد العزیز اور رفیق و رمضان مینگل جیسے دہشتگرد قانون نافذ کرنے والے اداروں کی گرفت سے آذاد گھوم رہے ہوں اور ان کو خراش بھی نہ آئی ہو تو اس کا مطلب واضح ہے کہ حکومتی دعوؤں اور عملی اقدامات میں کھلا تضاد ہے۔

اپریل کی اٹھارہ تاریخ کو رینجرز کے تشدد کا نشانہ بن کے شہید ہونے والے سنی اتحاد کونسان کے رہنما کی اندوہناک شہادت کے بعد پاکستان کی پر امن بریلوی اکثریت یہ سوال کرنے پر مجبور ہے کہ پاکستان بھر میں ریاستی اداروں ، سکولوں ، مساجد ، امام بارگاہوں اور عوامی اور ریاستی املاک پر حملہ کرنے والے تکفیری دیوبندی دہشت گردوں کے خلاف کب کاروائی کی جائے گی ؟

About the author

Shahram Ali

68 Comments

Click here to post a comment