Original Articles Urdu Articles

صدام حسین کی قبر اور لاش کے ساتھ داعش کا سلوک

wahid_2942025b

صدام حسین نے ہمیشہ عراق کے شیعہ مسلمانوں اور لبرل سنی کرد مسلمانوں کے ساتھ حقیرانہ اور ظالمانہ سلوک کیا اور متعصب سنی اور سلفی عرب قبائل کو سنی کردوں اور شیعہ عربوں کے خلاف استعمال کیا – آج اس کی قبر کو بم مار کی مکمل طور پر مسمار کر دیا گیا ہے، لاش تک نکال لی گئی اور پھر اس کے ساتھ کیا سلوک ہوا، کوئی نہیں جانتا، داعش والے معمولی اختلاف پر زندوں کو جلا دیتے ہیں، مردہ صدام حسین کس بھاؤ بکتا ہے، اور یہ سارا سلوک صدام حسین کی قبر اور لاش کے ساتھ اس کے اپنے چہیتے عرب سنی اور سلفی جنگجوؤں نے کیا

اسے کہتے ہیں مکافات عمل – حلبجہ کے مظلوم سنی کردوں اور بصرہ کے مظلوم شیعہ عربوں کو ہمارا سلام

——————
داعش نے صدام حسین کی قبر کا نام ونشان مٹا دیا
پیر 25 جمادی الاول 1436هـ – 16 مارچ 2015م

دبئی ۔ العربیہ

عراق و شام سے شدت پسند تنظیم دولت اسلامیہ’’داعش‘‘ کے جنگجوئوں نے شمالی عراق کے تکریت میں مصلوب صدر صدام حسین کی قبر مکمل طورپر مسمار کرتے ہوئے اس کانام و نشان مٹا دیا۔

العربیہ ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق تکریت میں داعش کے خلاف عراقی فوج کے آپریشن میں شامل شیعہ ملیشیا کے جنگجوئوں نے بتایا ہے کہ داعش کے جنگجوئوں نے جنوبی تکریت میں العوجہ کے مقام پر واقع صدام حسین کی قبر کو دھماکہ خیز مواد سے اڑا دیا ہے جس کے بعد قبر کا نام و نشان تک مٹ گیا ہے۔
خیال رہے کہ داعش نے پچھلے سال اگست میں صدام حسین کی قبر کو جزوی طور پر مسمار کرکے صدام حسین کی باقیات کو نکال لیا تھا