Original Articles Urdu Articles

تکفیری دیوبندی دہشت گردوں اور دیوبندی جماعت اسلامی کا معاشقہ – خرم زکی

10712925_10203955860476671_4316841351410313962_n

یہ جو ہمارے بعض دوست مجھ پر اعتراض کرتے ہیں کہ میں جماعت اسلامی اور سراج الحق پر بیجا تنقید کرتا ہوں وہ سراج الحق صاحب کا یہ بیان غور سے پڑھیں۔ موصوف فرماتے ہیں کہ “اسلام پسندوں” کو پھانسیاں مغرب کو خوش کرنے کے لیئے دی جا رہی ہیں۔ کوئی اس شخص سے پوچھے کہ بھائی اسلام کے ٹھیکیدار یہ جی ایچ کیو پر حملہ کرنے والے، یہ شیعہ مسلمانوں کو قتل کرنے والے، یہ سنی بریلویوں کو قتل کرنے والے، یہ آئی ایس آئی پر حملہ کرنے والے، یہ اسلام پسند کیسے ہو گئے ؟ یہ معصوم بچوں کا قتل عام کرنے والے اسلام پسند کیسے ہو گئے ؟

پھر تم اور تمھارے حمایتی کہتے ہیں کہ ہم تو دہشتگردی کے مخالف ہیں جبکہ ریکارڈ پر ہے کہ یہ تمھاری جماعت ہی کا منور حسن تھا جس نے پاکستان میں قتال کے لیئے طالبان کو سر عام دعوت دی تھی اور اب تم بھی کھل کر ان دہشتگردوں کو اسلام پسند کہ رہے ہو اور پھر لوگوں کو بیوقوف بناتے ہو کہ تم دہشتگردی کے خلاف ہو جبکہ دہوسری طرف معصوم بچوں کو ذبح کرنے والوں کو، معصوم بچوں کا قتل عام کرنے والوں کو، سنی بریلوی اور شیعہ مسلمانوں کا قتل عام کرنے والے تکفیری دیوبندی دہشتگردوں کو اسلام پسند بھی کہتے ہو ؟

اس سے بڑی منافقت اور بیغیرتی اور کیا ہو سکتی ہے ؟ یہی وجہ ہے کہ آج کے دن تک تم نے ان تکفیری دیوبندی دہشتگردوں کی نام لے کر مذمت نہیں کی بلکہ تم خود ان تکفیری دیوبندی دہشتگردوں، انجمن سپاہ صحابہ (کالعدم دہشتگرد اہل سنت والجماعت) کے ساتھ جھنگ کا دورہ کرتے رہے، سنی بریلویوں اور شیعہ مسلمانوں کے قاتلوں کی منصورہ میں آؤبھگت کرتے رہے، بلکہ جی ایچ کیو پر حملہ کرنے والا دہشتگرد عقیل عرف ڈاکٹر عثمان بھی تمہیں لوگوں کا منصورہ میں مہمان رہا۔

بات بہت آسان ہے جناب سراج الحق صاحب کہ تم لوگوں نے اصل میں لوگوں کو بیوقف بنانے کے لیئے محض اسلام کا لبادہ اوڑھ رکھا ہے ورنہ اندر سے، سوچ و فکر کے لحاظ سے تم خود بھی ایک تکفیری دیوبندی دہشتگرد ہی ہو۔ یہی وجہ ہے کہ دہشتگردوں کو اسلام پسند کہتے ہو اور وہ مدارس اور مساجد جو ان دہشتگردوں کو تیار کر رہی ہیں، جہاں ان دہشتگردوں کی ذہن سازی ہوتی ہے، ان کا دفاع کر رہے ہو۔ تمھیں مساجد بھی صرف وہی نظر آتی ہیں جہاں کھلے عام دہشتگردی کا پرچار ہوتا ہے، جیسے لال مسجد جیسی مساجد۔ جبکہ راولپنڈی اور جمرود میں جب تمھارے تکفیری دیوبندی دہشتگرد مساجد پر ہی حملہ کرتے ہیں تو تمھاری زبان سے اپنے تکفیری دیوبندی بھائیوں کی مذمت میں ایک لفظ بھی نہیں نکلتا۔

اور کیا یہ حقیقت نہیں کہ کتنے ہی مدارس ایسے ہیں جو طالبان کے تکفیری دیوبندی دہشتگردوں کے ساتھ اتحادی ہیں اور جو ان کی غیر قانونی اور دہشتگرد سرگرمیوں میں معاونت کا کام کر رہے ہیں ؟ کیا یہ سچ نہیں کہ پاکستان میں مسلمانوں کا قتل عام کرنے والے، ہماری مسلح افواج اور سیکیورٹی اداروں پر حملہ کرنے والے ہر دہشتگرد کا تعلق دیوبندی مدارس سے ہے ؟ اس کے بعد بھی ان مدارس کی حمایت کا اس کے علاوہ اور کیا مقصد ہو سکتا ہے کہ تم اور تمھارے حمایتی پاکستانوں کے خلاف ہونے والے اس قتال اور قتل عام کے حامی ہیں اور تم دانستہ ان تکفیری دیوبند دہشتگردوں کی اعانت اور مدد کر رہے ہو۔

اور پھر کوئی تم کو بتانے والا یا پوچھنے والا ہے کہ جناب عالی یہ مغرب نے کب ان پھانسیوں کی حمایت کی ہے ؟ اقوام متحدہ سے لے کر یورپی یونین تک تمام مغربی مملک تمھاری طرح ان تکفیری دیوبندی دہشتگردوں کی پھانسی کے مخالف ہیں کیوں جس طرح تم پاکستان دشمن ہو، اسی طرح یہ مغرب بھی نہیں چاہتا کہ پاکستان میں امن قائم ہو۔ اور پھر ایک طرف تو تم اسلام پسندی کے درس دیتے ہو اور پھر دوسری طرف اسلام کے قانون قصاص کی مخالفت کرتے ہو ؟ کیا اسلام میں قتل عمد اور محاربے کی سزا پھانسی نہیں ہے ؟ کیا تکفیری دیوبندی دہشتگردوں نے اپنا کوئی نیا اسلام گڑھ لیا ہے ؟ پوری دنیا جانتی ہے کہ زرداری حکومت نے پھانسی کی سزا پر پابندی مغربی دباؤ پر لگائی تھی جس کو اب مسلح افواج کے دباؤ پر موجودہ حکومت نے ختم کیا ہے اور تم عوام کو یہ راگ سنا رہے ہو کہ پھانسی مغرب کو خوش کرنے کے لیئے دی جا رہی ہے ؟ سراج الحق صاحب تمھارے جھوٹ اور منافقت کی کوئی حد ہے بھی کہ نہیں؟ عوام کو اور کتنا بیوقوف بنانا چاہتے ہو ؟

چودھری نثار اپنی پریس کانفرنس میں تسلیم کر چکا کہ 10 فیصد تکفیری دیوبندی مدارس دہشتگردی میں ملوث ہیں، تو تم کیوں نہیں چاہتے کہ ان مدارس کے خلاف کاروئی ہو ؟ کیا ریاست کو دہشتگردی کے اڈوں کو ختم کرنے سے پہلے وفاق المدارس اور سراج الحق کی اجازت کی ضرورت ہے؟

منور حسن اور سراج الحق کے بیانات سے ایک بات کھل کر سامنے آ گئی ہے کہ جماعت اسلامی اب پاکستان میں قتال اور دہشتگردی کی حامی ہیں اور یہی وجہ ہے کہ تمام تر اخباری بیانات کے باوجود اس جماعت نے نہ صرف ان تکفیری دیوبندی دہشتگردوں کی نام لے کر مذمت نہیں کی ہے بلکہ اب ان پھانسی پانے والے دہشتگردوں کو اسلام پسند بھی ٹہرا رہے ہیں۔ اپنے اس طرظ عمل سے یہ جماعت پاکستان میں محض سیکولر اور لبرل طبقے کو مضبوط کر رہی اور دین کی کوئی خدمت نہیں کر رہی۔

B1s7BS5CQAAKadI B1s7BUQCYAA_Rsl difa-e-pakistan Siraj-and-Lid