Original Articles Urdu Articles

جنید جمشید ساگا اور تبلیغی جماعت کے تناظر میں مولوی طارق جمیل کے نام عاکف خان کا یہ کهلا خط

 

 

Maulana-Tariq-Jameel-Latest-Picture-With-Junaid-Jamshed29633156_201410104217

جنید جمشید ساگا اور تبلیغی جماعت کے تناظر میں مولوی طارق جمیل کے نام عاکف خان کا یہ کهلا خط پڑهیئے اور سردهنیے ، جو بات بهی کی لاجواب کی  آج کل آپ کی تعریف میں کافی قصیدے لکھے جا رہے ہیں اور ہر دوسرا کالم نگار حضرت کی عامر خان کے ساتھ “انٹریکشن” کو بیان کرتا پھرتا ہے۔

میرے کچھ سوالات ہیں اور کچھ اعتراضات۔ جن دوستوں نے مولانا کی ویڈیو دیکھی ہے وہ جواب دے سکتے ہیں۔ پہلا تو یہ کہ آپ کو اخلاقی طور پر بالکل بھی زیب نہیں دیتا تھا کہ وہ ایک شخص کے ساتھ اپنی ذاتی انٹریکشن کو پبلک میں اسکی اجازت کے بغیر بیان کر رہے ہیں۔

دوسری جس بات پر مجھے اعتراض ہے وہ یہ ہے کہ آپ کے ہر لفظ سے ایک خدائی غرور جھلک رہا ہے اور آپ کسی صورت بھی عامر خان کو اپنے آپ سے بہتر انسان سمجھنے کے لئیے آمادہ نہیں ہیں نہ تو فلمی شعبہ کے حوالے سے اور نہ ہی دینی شعبے کے حوالے سے۔ جبکہ مسلسل اس بات پر بھی اشد اصرار کر رہے ہیں کہ وہ ایک اہم آدمی ہے اور اس سے ملاقات کو باعث تفاخر بھی سمجھ رہے ہیں جیسا کہ عموما تبلیغی حضرات کرتے ہیں۔ سعید انور، یوسف یوحنا سے سلطان گولڈن اور شاہد آفریدی تک کی سیلیبرٹیز آپ لوگوں کا ٹریڈ مارک بن چکی ہیں اور باقاعدہ طور پر خواص میں جرنیلوں، بڑے گورنمنٹ آفیسروں اور اہم سیاستدانوں کے ہم پلہ ہی اہم جگہوں پر ایڈورٹائز کی جاتی ہیں۔

مولانا آپ کو یہ بھی برا لگ رہا ہے کہ آپ عامر خان کی “حرام” فلم کی کامیابی کے لئیے کیونکر دعا فرمائیں۔ اسکے ساتھ آپ اسکا دل بھی نہیں دکھانا چاہتے۔ لیکن ایک مجمع میں یہ بات کر کے اپنی بڑائی بھی بیان کر رہے ہیں۔ حضور اب اگر عامر خان آپ کی یہ گفتگو سنے گا تو آپ کی کیا عزت رہ جائے گی؟

مجھے ایک دو دفعہ آپکو ڈائریکٹ سننے کا اتفاق ہوا ہے، اگر آپکے مقلدین نصرت جاوید کی طرح مجھے بھی نہ رگڑیں تو ایک عرض کروں؟ آپ کے لہجے میں مجھے شیرینی، محبت اور نصیحت کبھی نظر نہیں آئی۔ بلکہ رعونت، غرور، تکبر اور خدائی جلال کی نقل اور شور ہی نظر آیا ہے۔ جبکہ آپ اور آپ کے ہم پلہ و پیالہ فرماتے ہیں کہ تکبر خدا کو پسند نہیں۔

برائے مہربانی لوگوں کے تقویٰ کا فیصلہ خدا پر چھوڑ دیں۔ مزید براں، آپ نے اپنی MBBS کی ڈگری چھوڑ کر کسی پر احسان نہیں فرمایا۔ ایک غریب آدمی ایسا نہیں کر سکتا، جو اپنی دیہاڑی، ریڑہی اور نوکری چھوڑ کر سہ روزوں، چلوں اور سال کے دوروں پر جاتے ہیں، انکی نہ تو جائیدادیں ہوتی ہیں اور نہ ہی اہل و عیال کے کفیل۔ وہ اپنی آخرت کے چکر میں کافی لوگوں کی دنیاوی پریشانی کا باعث بن رہے ہوتے ہیں۔

والسلام،
ایک خیر خواہ
عاکف خان

About the author

Guest Post

4 Comments

Click here to post a comment
  • tasuib ki aniak laga kar kuch nazar nehi ayta apka koi kasoor nehi Allah pak apko hadiat dain ameen

  • Tariq Jamil sb. kee khidmat firqa wariyat kay khilaf ziada hain. Unsay Shia aur Sunni dono aik tarah say aqeedat hay. Wo ghulam e ahl e bait hain, is main shak nahi. Aamir Khan aou unka interaction juzwi bat lagti hay.

  • Hakif Khan, What you have said about Tariq Jamil Sahib are for for away from the facts. What ever you mentioned in the letter, no one has herd (nor seen) that in any sermon speech of Maolana. However, if you have any solid and reliable prop, do share with people.
    What you evils have you mentioned in the Maolana speeches is the other way round. His entire life is spread on the struggle against these evils. His every word is against GHAROOR, TAKABORE.
    At the end I will advise you to spend some little time with Tableghi Jumat, so that you reach the facts.