Original Articles Urdu Articles

ایم کیو ایم پر مفتی نعیم کی حامی تکفیری دیوبندی لابی کا غلبہ اور کراچی میں جاری شیعہ نسل کشی

10590669_10203182550384402_1248590885249075715_n

 

الطاف حسین کا اعتراف کہ متحدہ قومی موومنٹ کی صفوں میں انجمن سپاہ صحابہ/لشکر جھنگوی سے تعلق رکھنے والے افراد در آۓ ہیں جو شیعہ مسلمانوں کے قتل عام اور نسل کشی میں ملوث ہیں. واضح رہے رینجرز ترجمان کے مطابق علامہ عباس کمیلی کے صحابزادے علامہ علی اکبر کمیلی کے قتل میں بھی متحدہ قومی موومنٹ کے کارکنان ملوث ہیں.

اپنی حالیہ تقریر میں الطاف حسین نے کارکنوں کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ سب کو میرا کہنا ماننا ہوگا اور یہ دیکھنا ہوگا کہ کون ہماری صفوں میں داخل کیا گیا ہے جو شیعہ اور سنیوں میں منافرت پھیلا رہا ہے، ایسے عناصر پر نظر رکھیں، اگرتصدیق ہوجائے تو ایسے عناصر کو تحریک کی صفوں سے باہر نکالا جائے اور قانون کے حوالے کیا جائے۔ 

دوسری جانب سندھ رینجرز نے الزام عائد کیا ہے کہ علامہ عباس کمیلی کے جواں سال فرزند ذاکر اہل بیت (ع) علامہ علی اکبر کمیلی کی شہادت کے واقعہ میں متحدہ قومی موومنٹ ملوث ہے، تاہم ایم کیو ایم کے قائد الطاف حسین نے رینجرز کے اس مؤقف کی سختی کے ساتھ مذمت کرتے ہوئے تردید کردی

Bxp3yMUCIAA0lZj

لیکن یہ بات روز روشن کی طرح عیاں ہے کہ کراچی میں ایم کیو ایم کی صفوں میں کالی بھیڑیں موجود ہیں جن کا تعلق سپاہ صحابہ اور لشکر جھنگوی نامی تکفیری دیوبندی گروہ سے ہے – جو نا صرف شیعہ مسلمانوں کے قتل عام میں ملوث ہیں بلکہ بریلوی اور غیر تکفیری دیوبندی حضرات کے قتل عام میں بھی ملوث ہیں –

یہاں یہ بات بھی غور طلب ہے کہ گزشتہ سال ایم کیو ایم کی قیادت کی جانب سے اورنگ زیب فاروقی سے ملاقات کے دوران جس فہرست کا تبادلہ ہوا تھا جس میں ستر شیعہ افراد کے نام شامل تھے ان میں سے اکثریت اب تک قتل کر دی گیی ہے – مفتی نعیم اور ایم کیو ایم کی اعلی قیادت کے باہمی تعلقات بھی کسی سے ڈھکے چھپے نہیں ہیں

اب وقت آگیا ہے کہ ایم کیو ایم اپنی صفوں میں موجود تکفیری دیوبندی دہشت گردوں کو نکال باہر کرے اور صوبہ سندھ اور شہر کراچی سمیت پورے پاکستان میں امن کے لئے اپنا کردار ادا کرے –