Featured Original Articles Urdu Articles

آل سعود اور وہابی ملاّ روضہ رسول مسمار کرنے کی ناپاک منصوبہ بندی کررہے ہیں – برطانوی اخبار کا انکشاف

Muslims waiting to pray at the tomb of the Prophet at al-Masjid al-Nabawi in Medina

برطانیہ کے معتبر اخبار ڈیلی اںڈی پینڈنٹ رپورٹر اور فری لانس ایڈیٹر اینڈریو جانسن نے ایک خصوصی رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ سعودی عرب کے ایک بڑے وہابی سرکاری مولوی نے ایک ڈاکومنٹ لکھی ہے جس میں اس نے یہ تجویز دی ہے کا مسجد نبوی سے ملحقہ روضہ رسول اللہ صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کو منہدم کردیا جائے اور جسم اطہر کو وہاں سے جنت البقیع میں نامعلوم جگہ منتقل کردیا جائے
یہ ڈاکومنٹ مدینہ میں مسجد نبوی کے نگران مولویوں میں گردش کررہی ہے جبکہ مکہ اور مدینہ دونوں حرموں کے ںگران سعودی بادشاہ عبداللہ ہے
اس اخبار سے پہلے یہی خبر روس ، فرانس سمیت کئی اور ملکوںکے زرایع ابلاغ بھی دے چکے ہیں کہ سعودی عرب کے حکمران خاندان آل سعود پر انتہائی سخت گیر وہابی مولوی دباؤ ڈال رہے ہیں کہ مسجد نبوی کے ساتھ بنے قبہ رسول صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کو گرایا جائے اور یہاں سے حضرت محمد صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم اور ان کے دو ساتھی حضرت ابو بکر صدیق و حضرت عمر فاروق رضی اللہ عنھما کے اجسام کو وہاں سے ہٹا دیا جائے اور ان کو جنت البقیع بغیر نشاندھی کئے دفنا دیا جائے
لیکن آل سعود اور اکثریتی وہابی علماء کا خیال یہ ہے کہ ایسا کرنا خطرے سے خالی نہیں ہے کیونکہ اس سے پورے عالم اسلام ميں خاص طور پر اہل سنت و اہل تشیع کی طرف سے سخت ردعمل آئے گا کیونکہ ان دونوں فرق اسلامی کے ںزدیک روضہ رسول بہت ہی مقدس ، مکرم اور برکت والی جگہ ہے
اصل میں حجاز میں جب سے وہابی ازم نے غلبہ حاصل کیا اس وقت سے وہابی لوگوں کی کوشش رہی ہے کہ مدینہ منورہ میں مسجد نبوی سے ملحق مزار انور کو بھی منہدم کردیا جائے اور یہ کوشش ابن سعود نے 1926ء میں حجاز کو پہلی مرتبہ اپنی پوری گرفت میں لینے کے بعد بھی کی تھی اور اس وقت اس نے جب مکہ اور مدینہ میں جنت البقیع و جنت معلی دونوں کو مسمار کرڈالا اور دیگر کئی ایک مقدس اور تاریخ اسلامی ميں انتہائی اہمیت کے حامل آثار کو تباہ کرڈالا تھا اور اس کے اس اقدام کی پورے عالم اسلام نے مذمت کی تھی اور جب اس نے روضہ رسول کو منہدم کرنے کی کوشش کی تو اس پر ترکی کے کمال اتاترک نے حجاز پر حملہ کرنے کی دھمکی بھی دی جبکہ ہندوستان جو اس وقت برطانوی کالونی تھا میں کمیٹی برائے حفاظت مقامات مقدسہ حجاز بھی تشکیل دی گئی تھی اور اس وقت پورے عالم اسلام میں ابن سعود کے خلاف جذبات پیدا ہوئے اور ابن سعود کو خاصا خظرہ محسوس ہا تو اس نے پورے عالم اسلام سے سنّی اور شیعہ علماء کے وفود طلب کئے اور یہ پہلی عالمی موتمر اسلامی تھی جو ابن سعود نے بلوائی تھی
اس موتمر میں بقول شبیر عثمانی دیوبندی ،مولوی مخمد علی جوہر ابن سعود نے وعدہ کیا کہ مدینہ ومکّہ کا انتظام و انصرام عالم اسلام کی ایک متفقہ نمائندہ کمیٹی کے حوالے کردیا جائے گا اور وہی حرمین شریفین کی دیکھ بھال کی زمہ دار ہوگی ، ابن سعود نے جنت البقیع اور جنت معلی کو دوبارہ تعمیر کرنے کا وعدہ بھی کیا
لیکن یہ وعدے کبھی پورے نہیں ہوئے بلکہ مزید حجاز سے اسلامی کلچر اور اس کی نشانیوں اور تاریخ کو مٹائے جانے کا سلسلہ توسیع حرم پروجیکٹوں کے نام سے کیا جاتا رہا ہے اور حرمین شریفین کو آل سعود اور ان کے وہابی پرچارکوں نے اپنی زاتی پراپرٹی بنائے رکھا ہوا ہے
اسلامی ثقافت وورثہ فاؤنڈیشن کے دائریکٹر عرفان علوی کہتے ہیں کہ آل سعود اور ان کے سعودی وہابی مولویوں نے حجاز کو مکمل طور پر تاریخ آل سعود بنانے میں لگے ہوئے ہیں اور جو ان کے وہابی نظریات کے آڑے آنے والی شئے ہو اسے یہ ہر صورت مٹانے کی کوشش کرتے ہیں
مکّہ مکرمہ اور مدینہ منورہ میں انھوں نے حضرت خدیجہ کے مکان سے لیکر مولد نبوی اور محلہ بنی ہاشم سے لیکر قبور اصحاب رسول و اہل بیت اطہار و صالحین امت کے نشان مٹاڈالے اور ابھی عین مولد نبوی جہاں مکتب قائم کردیا گیا تھا وہاں پر میٹرو اسٹیشن کا منصوبہ بنایا جارہا ہے اور توسیع حرم پروجکیٹ میں ان کے زیر غور خود رسول کریم صلی اللہ علیہ وآلہ وسلم کا مزار بھی ختم کرنے پر غور کیا جارہا ہے
جو چیز عالم اسلام کے اکثریتی لوگوں کے ںزدیک بہت محترم و مکرم ہے اور عقیدتوں و محبت کا محور ومرکز ہے اس کو وہابیت شرک اور کفر خیال کرتی ہے اور 1925ء سے کسی خاص موقعہ کی تلاش میں ہے

http://worldshiaforum.wordpress.com/2012/08/22/are-the-saudi-wahhabi-clergy-waiting-for-an-opportunity-to-destroy-the-prophets-mosque-in-medina-by-ali-taj/

http://worldshiaforum.wordpress.com/2012/11/01/saudis-plan-to-raze-the-harem-of-prophet-mohammed-pubh-by-ali-taj/

http://www.independent.co.uk/news/world/middle-east/saudis-risk-new-muslim-division-with-proposal-to-move-mohameds-tomb-9705120.html

http://www.zemtv.com/2014/01/25/%D9%85%D9%82%D8%AF%D8%B3-%D9%85%D9%82%D8%A7%D9%85%D8%A7%D8%AA-%D8%A7%D8%AD%D8%AA%D8%B1%D8%A7%D9%85-%DB%8C%D8%A7-%D8%A7%D9%86%DB%81%D8%AF%D8%A7%D9%85%D8%9F/

About the author

Muhammad Bin Abi Bakar

4 Comments

Click here to post a comment