Featured Original Articles Urdu Articles

جنگ، جیو اور کالعدم تنظیموں کا اتحاد، ایک لمحہ فکریہ – انصاف سٹوڈنٹس کا موقف

insaf

24



روزنامہ ڈان کی خبر کے مطابق گزشتہ روز سولہ اگست کو اسلام آباد میں انقلاب مارچ ریلی میں عمران خان صاحب کی جیو ٹیلی ویژن اور میر شکیل الرحمن پر تنقید کے بعد پی ٹی آئی کے کچھ افراد نے جیو ٹی وی کے کچھ لوگوں کو دھکے دے کر سٹیج سے دور کر دیا جبکہ اے آر وائی چینل کے ساتھ ان کا سلوک بہت بہتر تھا – اس طرز عمل کی وجوہات پر غور کرنا ضروری ہے – اس کے ساتھ ساتھ ہم کچھ ایسی تجاویز بھی دینا چاہتے ہیں جن سے جنگ اور جیو پر دباؤ میں اضافہ ہو گا

گزشتہ چند سالوں سے سعودی اور عالمی استعماری ایجنڈے پر چلتے ہوۓ جنگ اور جیو، مسلم لیگ نواز کے میڈیا ونگ کا کردار ادا کر رہا ہے اور اس کے ساتھ ساتھ سعودی عرب اور نواز شریف کی سرپرستی میں چلنے والی تکفیری دہشت گرد جماعتوں کو بھی پروموٹ کر رہا ہے

خفیہ اداروں کی رپورٹس کے مطابق کالعدم دہشت گرد جماعت سپاہ صحابہ ( نام نہاد اہلسنت والجماعت) کے سربراہ احمد لدھیانوی نے جنگ گروپ اور جیو ٹیلی ویژن کے ایک اہم ترین اور سینئر صحافی سے ملاقات کی اور میر شکیل الرحمن کو اپنی مکمل حمایت کا یقین دلاتے ہوۓ ایک خصوصی پیغام بھجوایا – یاد رہے کہ ڈاکٹر طاہر القادری کی پاکستان عوامی تحریک کے انقلاب مارچ اور عمران خان کی پاکستان تحریک انصاف کے آزادی مارچ میں لاکھوں کی تعداد میں سنی صوفی، بریلوی، اعتدال پسند اہلحدیث و دیوبندی اور شیعہ مسلمانوں اور اقلیتی برادریوں کی شمولیت نے تکفیری فرقہ وارانہ جماعتوں کو بوکھلا دیا ہے جن کی سیاسی سرپرستی سعودی حمایت یافتہ طالبان نواز جماعت مسلم لیگ ن کرتی آئی ہے جبکہ جنگ گروپ اور جیو ٹیلی ویژن میں شامل حامد میر، نجم سیٹھی، انصار عباسی، عرفان صدیقی، سلیم صافی، عمر چیمہ، عطا الحق قاسمی وغیرہ جن کے مسلم لیگ نواز شریف سے مالیاتی یا نظریاتی مفادات وابستہ ہیں مسلسل عمران خان اور ڈاکٹر طاہر القادری کے خلاف یکطرفہ غلیظ پراپیگنڈے میں مصروف ہیں – یاد رہے کہ جنگ گروپ اور جیو ٹیلی ویژن پر کالعدم تکفیری فرقہ وارانہ جماعت سپاہ صحابہ جس نے دس ہزار سے زائد سنی صوفی بریلوی مسلمانوں، بائیس ہزار سے زائد شیعہ مسلمانوں اور سینکڑوں مسیحیوں اور احمدیوں کو شہید کیا ہے کے دہشت گرد قائدین احمد لدھیانوی اور اورنگزیب فاروقی کو سنی یا اہلسنت رہنماؤں کے طور پر پیش کیا جاتا ہے جس کی سنی اتحاد کونسل، سنی تحریک اور مجلس وحدت المسلمین نے شدت سے مذمت کی ہے – خاص طور پر نجم سیٹھی اور حامد میر کے پروگراموں میں سپاہ صحابہ کے احمد لدھیانوی کو پروموٹ کیا جاتا ہے جبکہ انہی پروگراموں میں عمران خان اور ڈاکٹر طاہر القادری کے خلاف یکطرفہ اور بے بنیاد باتیں کی جاتی ہیں

سوشل میڈیا پر مسلم لیگ نواز کے علاوہ کالعدم دہشت گرد جماعت سپاہ صحابہ (نام نہاد اہلسنت والجماعت)، طالبان اور لشکر جھنگوی کے رہنما اور کارکن مسلسل ڈاکٹر طاہر القادری اور عمران خان کے خلاف بے بنیاد الزامات اور تکفیری فتووں میں مصروف ہیں، احمد لدھیانوی، فضل الرحمن اور طاہر اشرفی جیسے سعودی عرب اور نواز شریف کے پالتو مسلسل چیرمین عمران خان صاحب اور علامہ ڈاکٹر طاہر القادری کو یہودیوں اور عیسائیوں کا ایجنٹ اور وطن دشمن کہ رہے ہیں


1121

22

23

ضروری ہے کہ پاکستان کے عوام جنگ گروپ اور جیو ٹی وی کے پاکستان دشمن اینکرز کے معاشی اور سماجی بائیکاٹ کریں، فقط پروگراموں میں عدم شرکت کافی نہیں بلکہ میر شکیل کے اقتصادی مفادات کو نقصان پہنچائیں

جیو اور جنگ کے اقتصادی مفادات کو زک پہنچائیں

————————

میر شکیل الرحمن کی سربراہی میں چلنے والے جنگ گروپ اور جیو ٹیلی ویژن کے پاکستان کے خلاف جرائم
———————–

کالعدم دہشت گرد تنظیموں طالبان، سپاہ صحابہ اور لشکر جھنگوی سے تعلق رکھنے والے تکفیری خارجی مولویوں اور ان کے حمایتیوں کی پروجیکشن اور حوصلہ افزائی
تکفیری خارجی دہشت گرد گروہ کے ہاتھوں شہید ہونے والے ستر ہزار پاکستانیوں جن میں ہزاروں عام شہری، فوجی، پولیس والے، دس ہزار سے زائد سنی بریلوی صوفی، بائیس ہزار سے زائد شیعہ، سینکڑوں احمدی، مسیحی و دیگر شامل ہیں، ان کے پاک خون سے غداری اور دہشت گر د جماعتوں کے نظریات کی ترویج
سعودی عرب اور امریکہ کے ایجنڈے پر چلتے ہوۓ پاکستان میں داعش، النصرہ، شام اور عراق جیسے حالات پیدا کرنا جن میں سنی صوفی مزارات کو مسمار کیا جائے، سنی اور شیعہ کو وہابی و تکفیری دیوبندی انداز میں ذبح کیا جائے اور اقلیتوں پر مظالم ڈھائے جائیں
وزیرستان اور ملک کے دیگر حصوں میں تکفیری طالبان، لشکر جھنگوی اور دیگر دہشت گردوں کے خلاف لڑنے والی پاک فوج کا مورال نیچے گرایا جائے
اعتدال پسند قوتیں جیسا کہ پاکستان عوامی تحریک، تحریک انصاف جو پاکستان میں سنی، شیعہ، مسیحی اور دیگر میں محبت پیدا کر کے ملک کی خدمت کرنا چاہتی ہیں کے خلاف پراپیگنڈا کیا جائے

کیا کیا جا سکتا ہے؟
———————-

جنگ اور جیو کے اقتصادی مفادات کو نقصان پہنچائیں
جنگ، عوام اور جیو کو ایک پیسے کا اشتہار نہ دیں
جیو ٹی وی، جنگ، عوام اور دی نیوز اخبار کی سبسکرپشن بند کردیں، ان کو خریدنے کے لیے ایک پیسہ بھی خرچ نہ کریں
اپنے کیبل والے سے کہیں کہ جیو ٹی وی کی نشریات بند کر دے کیونکہ یہ تکفیری دہشت گردوں کو پروموٹ کرتا ہے، پاک فوج کے خلاف یکطرفہ پراپیگنڈا
کرتا ہے
متحده قومی موومنٹ کے ماڈل پر چلتے ہوۓ جنگ، عوام اور دی نیوز اخبار کی کاپیوں کی تقسیم رکوا دیں تاکہ ملک کو نظریاتی اور عملی دہشتگردی سے بچایا جا سکے
پاکستان کے ہر شہر میں میر شکیل، حامد میر، نجم سیٹھی اور دیگر کے خلاف انسداد دہشت گردی کے مقدمات قائم کریں اگر فوج، پولیس، تحریک انصاف، عوامی تحریک، سنی اتحاد کونسل اور مجلس وحدت المسلمین کے ایک بھی فرد کو طالبان یا سپاہ صحابہ سے نقصان پہنچے تو ایف آئی آر ان پر درج کرائی جائے

 

25

14-2

About the author

Guest Post

134 Comments

Click here to post a comment