Original Articles Urdu Articles

صحابہ کا احترام اور مسلمانوں کی دو عملی – از آزاد ٹاک

amkafil

آپ نے کہا چار خلیفہ راشدین (رض) ہم نے کہا ٹھیک – تو جب ایک خلیفہ راشد کا باغی بھی آپ کے لئے قابل احترام ہو گیا تو کوئی تو مسئلہ ہے تاریخ میں

آپ نے کہا وہ (رض) ستارے جس کو مرضی فالو کرو ہم نے امام علی (ع) کو فالو کر لیا آپ نے کہا یہ مسلمان نہیں کافر ہیں

آپ نے کہا کچھ لوگ صحابہ کو گالی دیتے   ہم نے کہا تاریخ پڑھو کس نے روایت شروع کی

آپ نے کہا جو صحابہ کا احترام نہیں کرتا ہم میں سے نہیں ہم نے کہا جو سیکٹروں صحابہ کا قاتل ہو آپ کے لئے قابل احترام کیوں ہے

ایک صحابی کے بارے میں کتابیں کہتی ہیں صرف ایک روایت سچی ہے جو اسکی بھوک کے بارے میں ہے اپ سیکٹروں روایات کہاں سے لے آئے ؟

حضرت ابن عباس (ر) سے روایت ہے کہ میں بچوں کے ساتھ کھیل رہا تھا ،اتنے میں رسول اللہ (ص) تشریف لائے ،میں ایک دروازے کے پیچھے چھپ گیا .آپ (ص) نے ہاتھ سے مجھے تھپکا اور فرمایا جا معاویہ کو بلا لا،میں گیا پھر لوٹ کر آیا اور میں نے کہا وہ (معاویہ) کھانا کھاتا ہے .آپ (ص) نے پھر فرمایا جا اور معاویہ کو بلا لا.میں پھر لوٹ کر آیا اور کہا وہ کھانا کھاتا ہے .آپ (ص) نے فرمایا: اللہ اس کا پیٹ نہ بھرے
(صحیح مسلم،ص1403،کتاب:البروالصلتہ والادب،باب:25،حدیث:2604)

حافظ ابن کثیر نے اس حدیث کو اپنی تاریخ میں بھی نقل کیا ہے اور ساتھ میں ابن عباس (رہ) کے یہ الفاظ بھی نقل کئے ہیں کہ اس بددعا رسول کے بعد معاویہ کبھی سیر نہیں ہوا
(تاریخ ابن کثیر،ج 11،ص401)

ایک طرف آپ امام حسن (ع) کو جنت کا شہزادہ کہتے لیکن خلافت راشدہ کی بات ہو تو ان کو خلیفہ راشد نہیں مانتے

آپ مولا علی کی (ع) توہین کرتے ہوئے کہیں وہ شراب پی کر نماز پڑھتے رہے ہم انہی کتابوں سے حوالے دیں تو “توہین صحابہ“ ؟

آپ مولا علی (ع) کی بیٹی کی شادی حضرت عمر (رض) سے کتابوں سے ثابت کریں اور ہم انہی کتابوں سے حوالے دیں تو “توہین صحابہ“ ؟

جب تاریخ بیان کریں تو پوری بیاں کریں یہ نہیں کہ موتی چن لیں اور “پتھر“ قالیں کے نیچے چھپاتے جائیں

There are all heroes, no villains in self-manufactured histories, there are always external conspiracies to hide, justify and dilute crimes committed by the so called Sahabis.

It’s therefore no surprise that we find fatwas by the Darul Uloom Deoband and Salafi clerics in support of Yazid and a general silence of the so called Muslim Ummah on Muawiya’s crimes against Islam, Ahlul Bayt and humanity.