Featured Original Articles

تحریک طالبان پاکستان کے دہشت گردوں کی سرپرستی پاکستانی فوج اور خفیہ ادارے کرتے ہیں – حامد میر


Tehreek-e-Taliban Pakistan (TTP), Zaid Hamid and other terrorists and their apologists are sponsored by ISI, says Hamid Mir.

تحریک طالبان کے دہشت گرد پاکستانی فوج اور خفیہ اداروں کے پروردہ ہیں – حامد میر ، محمد مالک اور ابصار عالم

اکیس اکتوبر کو نشر ہونے والے پروگرام باٹم لائن میں معروف صحافیوں حامد میر، محمد ملک اور ابصار عالم نے کھل کر تحریک طالبان پاکستان پر تنقید کی اور پاکستانی طالبان کے پاکستانی فوج کے خفیہ اداروں کے ساتھ خفیہ روابط اور ریاستی سرپرستی کا انکشاف کیا

حامد میر نے یہ بھی بتایا کہ لال مسجد آپرشن کے دوران پاکستانی طالبان کا مقتول سربراہ بیت الله محسود اسلام آباد میں پارلیمنٹ لاج میں موجود تھا جس کو آئی ایس آئی نے مولانا سمیع الحق اور مولانا فضل الرحمان کے توسط سے بلایا تھا – حامد میر نے یہ بھی بتایا کہ بینظیر بھٹو کے دور میں بھی رحمان ملک اور دوسرے حکومتی اہلکار پاکستانی فوج کے اشارے پر طالبان کی سرپرستی میں مصروف تھے

پروگرام میں یہ بھی انکشاف کیا گیا کہ قبائلی علاقہ کے صحافی حیات الله خان کو طالبان نے نہیں، بلکہ آئی ایس آئی نے قتل کرایا تھا – حامد میر نے اس یقین کا اظہار کیا کہ صحافیوں کو دھمکی دینے والا طالبان کا ترجمان احسان الله احسان ایک فرضی نام ہے (ہمارے خیال میں ضرب مومن میں فرضی نام سے لکھنے والا جاوید چودھری بھی وہ شخص ہو سکتا ہے ) جس کے پس پردہ پاکستانی فوج ہے جو صحافیوں پر دباؤ بڑھانا چاہتی ہے تاکہ اپنی مرضی کی رپورٹنگ کرا سکے

حامد میر نے افغان جہاد کو نام نہاد جہاد قرار دیا اور کہا کہ جب تک پاکستانی فوج پاکستان اور افغانستان میں موجود طالبان کی سرپرستی بند نہیں کرتی، تب تک اس ملک سے دھشست گردی کا سامنا نہیں ہو سکتا

حامد میر نے لال ٹوپی والے مسخرے زید حامد پر بھی شدید تنقید کی اور اسے آئی ایس آئی کا آلہ کار قرار دیا

محمد مالک نے کہا کہ شیعہ مسلمانوں پر نسل کشی پر کے گئے ان کے پروگرام کے بعد ان کو بہت سے دھمکی آمیز پیغامات موصول ہوۓ

پروگرام میں موجود تمام صحافیوں نے طالبان اور پاکستانی فوج کے گھناونے کردار سے نفرت کا اظہار کیا جس پر جاوید چودھری مضطرب اور خاموش نظر آئے

About the author

SK

13 Comments

Click here to post a comment
  • Seems awfully like smoke and mirrors to me. Every one of these characters is a Military-Mullah alliance tool; for them to suddenly take up cudgels for freedom of speech/press is scarily similar to the Fakestani judicial liberty tamasha that culminated in the current Judges ka Raj. All in all, every bit as authentic a quest for Brave New World as the Tahrir Square hate’n’rape fest. The juiciest bit is `Hammy’ Mir’s dumping of all responibility for Pakistan’s Taliban coddling upon BB and the PPP. There really is no alternative for any moral person other than supporting the PPP; and perhaps the MQM in its present incarnation. Still, huge fun to watch the ISLAM KHATRAY MEIN HEY brigade’s pretzel-like contortiopns.Three cheers for the Jiyalas; perhaps the only redemptive feature of that benighted country. Asma bint Marwan.

  • I’m amazed at Hamid’s courage and honesty, the way he spoke so clearly against ISI, Lal topi and TTP, such honesty is very refreshing.

  • Benazir Bhutto once said: Pakistan army manufactures its assets, converts them into demons, fakes to chase them and then kills them. The fact that Baitullah Mehsood was ISI’s guest in Parliament Lodges during the Red Mosque (Lal Masjid) operation in Islamabad is one of many examples.

  • So finally LUBP is quoting Hamid Mir, he was labeled as an agent for State few days back. Now He is talking against ISI, This proves my point when I said He is not a tout LUBP was just like always wrong in this matter. So this propaganda forum LUBP should think before labeling anyone as an agent of anyone.

  • every one knows this fact. nothing is new. none of the anchor is out from command and control. no one, specially who is reporting/living in Islamabad Lahore or Karachi.

  • حامد میر کو سوائے خرافات اور بکواس کے کچھ نہیں آتا

    لال مسجد اپریشن میں مشرف کے خلاف بھونکنے والا یہی شخص تھا۔ اور اب اسکو ٹی ٹی پی کے پیچھے فوج کا ہاتھ نظر آ رہا ہے۔

    اور ان جیسے بیوقوفوں کو پاکستان میں بلیک واٹر، سی آئی اے، را جیسی تنظیموں کا کوئی کردار نظر نہیں آتا !! جیسے یہ یہاں مونگ پھلیاں بیچ رہی ہیں۔

    جبکہ جنوبی وزیرستان میں آپریشن شروع ہونے سے پہلے اس کی مخالف میں بھونکنے میں سب سے آگے تھا،

    اور شمالی وزیرستان میں آپریشن شروع کرانے کے لئیے سب سے زیادہ اس کا تقاضہ ہے۔

    جبکہ شمالی وزیرستان میں موجود کوئی گروہ پاکستان میں ہونے والی کسی بھی دہشت گردی میں نہ ملوث ہے اور نہ کوئی کردار۔

    اب جبکہ ٹی ٹی پی کے بارے میں مکمل ثبوت میڈیا پر ہیں اور وکی لیکس اور امریکہ عہدیدار بھی اعتراف کر چکے ہیں ٹی ٹی پی کے پیچھے دراصل بھارت ہے پھر بھی لوگوں کو گمراہ کرنے کے لئیے خرافات بکنے میں لگا ہے۔